برج حمل

آپ کے ستارے


  • برج حمل
  • برج ثور
  • برج جوزا
  • برج سرطان
  • برج اسد
  • برج سنبلہ
  • برج میزان
  • برج عقرب
  • برج قوس
  • برج جدی
  • برج دلو
  • برج حوت

برج حمل

خوبیاں

محنتی،ذہین،پرعزم،حوصلہ مند،خوش لباس،خوش گفتار،پرکشش،ہمدرد،جدت پسندحساس، محتاط،ثابت قدم،دوست قدم،دوست نواز، طاقتور، متا ثر کن،لوگوں امیں مقبول، نرم دل،کامیابی کے خواہاں،ہوشیار،دور اندیش۔

خامیاں

حاسد،لاپروا ،چرب زبان،جنسی بے را ہ روی،جلد باز،فضول خرچ،مغرور۔نفسیاتی الجھنوں کا شکار،تو ہم پرست ، اعصابی ، مریض ، غیر ذمہ دار ،خو شامد پسند ، کام ادھورا چھوڑنے والے ، سست ، کاہل ، مفاد پرست ، مکار۔

مشہور شخصیات

مولانا ابو الکا م آ زاد ، قادر ، الملک ، سر جیمز ہیری ، شار لیمان ، ولیم ہاروے ، ایتھل کیندی ، چارلی چپلن ، آئزن ہا ور ، ڈیکارٹ ، شاہ البرٹ۔

حمل مرد کی خصوصیات

گزشتہ صفحات پر ہم نے حمل افراد کے بارے میں ایک سرسری جائزہ لیا جس سے یقیناًان کے بارے میں مکمل طور پر آگاہی ممکن ہے اس لئے اب ہم ان افراد کے بارے میں تفصیل میں جانتے ہیں جس سے برج حمل سے تعلق رکھنے والے افرادنہ صرف خود اپنے بارے میں مختلف معلومات حا صل کر سکیں گے بلکہ دیگر بر جوں سے تعلق رکھنے والے بھی ان کے متعلق جان سکیں گے۔

مسحور کن شخصیت

ان کی شخصیت بڑی مسحور کن اور متاثر کرنے والی ہے۔ان سے ملاقات کرنے والے ان کے اس سحر اور تا ثر کو بخوبی محسوس کرسکتے ہیں۔جو لوگ ان سے ایک با رمل لیں وہ ان سے بار بار ملنا پسند کرتے ہیں ۔یہ کہا جا سکتا ہے کہ وہ ان کی شخصیت کے سحر میں گرفتار ہو جاتے ہیں۔

خوش گفتار

جس طرح ان لوگوں کی شخصیت سحرانگیز ہوتی ہے ، اس طرح ان کی گفتگو میں ایک سحر سا ہوتا ہے جو دوسروں کو اپنی جانب متوجہ اور راغب کر لیتا ہے لوگ ان سے گفتگو کرنا پسند کرتے ہیں۔

مزاح پسند

یہ افراد ا مزاح کی حس بھی رکھتے ہیں۔اکثر ان کی حرکات اور گفتگو میں مزاح کا رنگ نظر آتا ہے لیکن یہ اس طرح کی جتنی بھی حرکات اور گفتگو کرتے ہیں ان میں اخلاقیات کا بڑا خیال رکھتے ہیں ، یہ کبھی بد اخلاقی کا مظاہرہ کرنا پسند نہیں کرتے اور اخلاقیات سے گری باتوں سے دور رہتے ہیں۔ یہ ایسی محفلوں میں بھی شامل نہیں ہوتے جہاں بد تہذیبی اور بد اخلاقی کا مظاہرہ ہوتا ہے۔

بد مزاج

یہ اخلاقی تو نہیں ہاں بد مزاج ضرور ہوتے ہیں لیکن ان کی بد مزاجی کی کوئی نہ کوئی وجہ ضرور ہوتی ہے۔مثلااٌ اگر یہ کسی قسم کے ذہنی دباؤ میں مبتلا ہوں تو یہ بد مزاجی کا مظاہرہ کرتے ہیں یا پھر کسی کام میں الجھے ہوں اور ان سے کسی موضوع پر بات چیت کی کو شش کی جائے تو اکثریہ بد مزاجی کا مظاہرہ کرتے ہیں ، عام حالات میں یہ لوگ خوش اخلاق اور اچھے مزاج کے ہوتے ہیں۔

چڑچڑا پن

جس طرح یہ اکثر بد مزاجی کا مظاہرہ کرتے ہیں ، اسی طرح یہ چڑ چڑاپن بھی دکھاتے ہیں لیکن اس کے پس پردا بھی ویسی ہی وجوہات ہوتی ہیں جیسی کہ بد مزاجی کے عقب میں ہوتی ہیں ، بیماری یہ دہری چڑ چڑا ہٹ کا مظاہرہ کرتے ہیں ایک تو ان لوگوں سے جوان سے بات چیت کرتے ہیں اور دوسرے اپنی بیماری سے یہ چڑ چڑاہٹ کا مظاہرہ کرتے ہیں۔

رازدار

یہ لو گ اپنے اور دوسروں کے بہترین راز دار ہوتے ہیں۔ اگر کوئی انہیں اپنا راز بتا دے تو یہ اسے اپنے سینے میں دفن کر لیتے ہیں ، اگر کسی فرد سے ان کی کبھی لڑائی بھی ہو جاے تو یہ اس کے راز کو فشاء نہیں کرتے۔اس طرح یہ لوگ اپنے رازوں کو کبھی اپنی حد تک ہی رکھنا پسند کرتے ہیں۔یہ اپنے قریب ترین لوگوں کو بھی کبھی اپنے راز نہیں بتاتے ہیں۔

جارحانہ رویہ

اکثر ان لوگوں کا رویہ جار حانہ ہوتا ہے۔ جار حانہ پن ان کی فطرت کا حصہ ہے۔بسا اوقات لوگ ان لوگوں کی گفتگو میں سختی اور تلخی محسوس کرتے ہیں۔ نئے لوگ تو اس بات کو محسوس کرتے ہین ان کے ساتھ زیادہ وقت گزارنے والے لوگ ان کی اس عادت سے واقف ہوتے ہیں اس لئے کوئی رد عمل ظاہر نہیں کرتےاپنی اس عادت کی وجہ سے یہ لوگ اکثر کامیابیوں سے ہمکنار ہوتے ہیں لیکن کئی لوگ انہیں نا پسند بھی کرنے لگتے ہیں۔ یہ عادت انہیں فوج ، پولس ، وکالت ،سوشل ورکنگ اور دیگر کئی شعبوں میں کامیاب کرتی ہے۔

مغرور

اکثر ان کا رویہ مغرور سا ہوتا ہے اور ایسا جان بوجھ کر اختیار نہیں کرتے ہیں انہیں تو احساس بھی نہیں ہوتا کہ لوگ انہیں مغرور سمجھ رہے ہیں ، ان کی ان باتوں میں کچھ تکبر جھلکنے لگتا ہے بہر حال اکثر لوگ ان کی اس عادت سے واقف ہوتے ہیں اور ان کے اس رویے کو خاص اہمیت نہیں دیتے ہیں۔

نئے کاموں میں دلچسپی

یہ لوگ کبھی کسی ایک کام پر اکتفا نہیں کرتے۔ یہ نئے نئے کام سیکھنے میں دلچسپی رکھتے ہیں،جب کوئی ایک کام سیکھ جاتے ہیں تو کسی نئے کام کی طرف متوجہ ہو جاتے ہیں ، اس کے بعد کسی اور کام کی طرف راغب ہو جاتے ہیں ، یوں یہ سلسلہ چلتا رہتا ہے۔ جو ساری عمر جاری رہتا ہے۔

آزادی پسند

یہ افراد آزاد طبیعت کے مالک ہوتے ہیں۔ اپنے اوپر کسی کام کا دباؤ برداشت نہیں کرتے ہیں۔یہ اکثر دوسرں پر حکم چلانا چاہتے ہیں لیکن خود کسی کے حکم پر چلناپسند نہیں کرتے۔لیکن ایسی بات بھی نہیں ہے کہ ان کی خود سری اور آزادی طبیعت ہر وقت کارفرما ہوتی ہے۔یہ جب کسی ملازمت میں ہوں تو اپنے فرائض بخوبی انجام دیتے ہیں اور افسران بالا کانہ صرف حکم مانتے ہیں بلکہ اچھے سے اچھا کام کر کے ان کی نظروں میں اپنی اہمیت بڑھا دیتے ہیں۔

مظبوط قوت ارادی کے مالک

یہ لوگ مظبوط قوت ارادی کے مالک ہوتے ہیں۔ ان کے اندر جوش اور ولولہ ہوتا ہے۔ اگر یہ لوگ کوئی کام کرنے کی ٹھان لیں تو اسے ہر حال میں پورا کرنا چاہتے ہیں۔اپنے مقصد کی تکمیل کے لئے یہ انتھک محنت کرتے ہیں۔حالات چاہے کیسے بھی ہوں لیکن یہ لوگ حوصلہ نہیں ہارتے اور ڈٹے رہتے ہیں۔ انہیں یہ جنون سوار ہوتا ہے کی کسی نہ کسی طرح کامیابی حاصل کر نی ہے ، اگر کوئی ناکامی سامنے آئے تو گھبراتے نہیں ہیں اور ایک بار کامیابی کے لئے جدو جہد شروع کر دیتے ہیں۔

زیادہ محنت کرنے والے

یہ لوگ محنتی ہوتے ہیں لیکن ان کی ایک خصوصیت یہ بھی ہوتی ہے کہ یہ دوسرں سے زیادہ محنت کرنے والے ہوتے ہیں۔ اگر لوگ چار گھنٹے کام کریں تو یہ اس جگہ چھ گھنٹے کام کر سکتے ہیں اور ایسا یہ کسی کے دباؤ میں یا لالچ کے بغیر کرتے ہیں۔یوں کہا جا سکتا ہے کہ ن انہیں کام کا شوق ہوتا ہے۔ یہ ان کی کام میں دلچسپی کی بھی ایک دلیل ہوتی ہے۔ اس وجہ سے یہ خود بھی کام کرتے ہیں وہ بہت اچھا ہوتاہے۔یہ لوگ جن کاموں سے تعلق رکھتے ہیں ، ان میں بڑی دلچسپی کا مظاہرہ کرتے ہیں۔کام کا ایک ایک جز ، ایک ایک نکتے پر غور کرتے ہیں جس کی وجہ سے اچھے نتائج سامنے آتے ہیں ، یوں یہ کا میابی کی طرف گامزن ہوتے ہیں ، ان کی اس محنت اور لگن کو جہاں افسران وغیرہ سراہتے ہیں ان کے ساتھ کام کرنے والے ان سے حسد کرنے لگتے ہیں

دوسروں پر بھروسہ

یہ لوگ اکثر دوسروں پر بہت زیادہ بھروسہ کر لیتے ہیں۔ ان کی یہ عادت انہیں اکثر نقصان بھی دے جاتی ہے کیونکہ کئی لوگ ان کے بہت زیادہ بھروسے کی وجہ سے ان سے کوئی نا جائز فائدہ اٹھا لیتے ہیں یا انہیں اور کسی قسم کا نقصان پہنچا دیتے ہیں۔ بار بار دھوکا کھانے کے با وجود یہ پھر دوسروں پر بھروسہ کرنے کی عادت کو ترک نہیں کرتے ہیں

مقابلہ کرنے والے

یہ لوگ مقابلہ کرنے کی صلاحیت سے مالا مال ہوتے ہیں۔کسی بھی طرح ہار ماننا ان کی فطرت میں نہیں ہوتا ہے۔ اگر کسی جگہ انہیں اپنی ہار نظر آنے لگے تو ان کے اندر جوش کا ایک طوفان ٹھا ٹھیں مارنے لگتا ہے۔یہ مقابلہ کرنے کے لئے خود کو پوری طرح سے تیا ر کر لیتے ہیں اور دوران مقابلہ اپنی ذہنی اور جسمانی قوتوں کو بڑے مناسب انداز میں استعمال کرتے ہیں۔جب تک یہ کامیابی حاصل نہ کر لیں انہیں چین نہیں آتا ہے۔

تصوراتی دنیا میں رہنے والے

برج حوت سے تعلق رکھنے والے بھی دنیا میں رہ کر بہت خوشی اور مسرت محسوس کرتے ہیں ، اسی طرح برج حمل سے متعلق افراد میں بھی خصوصیت پائی جاتی ہے۔ تصورات کی دنیا میں رہنے کی خصوصیات ان لوگوں کے لئے نقصان سے ثابت ہوتی ہے اور کبھی فائدہ مند ، لوگ اکثر خیالی دنیا میں نت نئے منصوبے بنا تے رہتے ہیں اور صرف منصوبے بنا نے پر ہی اکتفا نہیں کرتے بلکہ ان پر عمل پیرا بھی ہو جاتے ہیں یہ منصوبے چونکہ مکمل طور پر ٹھوس بنیادوں پر نہیں بنائے گئے ہوتے ہیں اور ان میں خیا لات کی آمیزش زیا دہ ہوتی ہے اس لئے اکثر ان کے اکثر نتائج غلط بھی نکل آتے ہیں لیکن جن منصوبوں کے نتائج ان افراد کی توقع کے مطابق نکلیں تو یہ شاندار کامیابی ہوتی ہے۔
تصورات کی دنیا میں رہ کر صرف منصوبے ہی بناتے ہیں بلکہ یہ کہنا زیادہ مناسب ہوگا کہ یہ خیالی دنیا میں رہ کر سکون اور مسرت محسوس کرتے ہیں۔یہ اپنی مرضی کے مطابق خیا لات کو تر تیب دیتے ہیں اور ان سے محفوظ ہوتے ہیں۔مثلااٌ یہ خود کو ایک باغ میں تصور کریں گے جہاں خوش گوار ہوا چل رہی ہوگی ، ہر طرف پھول کھلے ہوں گے جن کی مسحور کن خشبو ماحول کو اپنی لپیٹ میں لئے ہو گی ، پرندے چہچہا رہے ہوں گے ، آسمان پر بادل کے ٹکڑے رقصاں ہوں گے ، ایسے میں ان کی محبوبہ چلی آے گی اور ان کے گلے میں با ہنہیں ڈال کر ان سے اظہار محبت کرے گی۔یہ تو ایک مثال تھی اس طرح کی کئی مثالیں دی جاسکتی ہیں۔ غرض یہ لوگ تصورات کو اپنی مرضی کے مطابق ڈھال کر ان سے خوب لطف اندوز ہوتے ہیں۔

جلد بازی

جلدی بازی ان کی فطرت کا ایک ایسا پہلو ہے جو ان کے لئے اکثر فائدہ مند اور بعض اوقات نقصان دہ ثابت ہوتا ہے، یہ لوگ اپنے بیشتر کاموں میں عجلت کا مظاہرہ کرتے ہیں
اپنی عاد ت کو یہ لوگ خوب پہچانتے ہیں ، اسی وجہ سے چوٹ کھانے کے بعد یہ فیصلہ کرتے ہیں کہ آئندہ جلدی بازی نہیں کریں گے لیکن جب کوئی اور کام شروع کرتے ہیں تو یہ سب باتیں بھول کر ایک بار پھر جلد بازی کا مظاہرہ کرنے لگتے ہیں۔

اختلاف رائے

اکثر معا ملات میں یہ لوگ دوسرں سے اختلاف رائے رکھتے ہیں۔ یہ ان کی عادت بھی ہوتی ہے

ا وران کا اختلاف رائے بڑا بر ملا اور بے دھڑک ہوتا ہے جو اکثر تلخ کلامی اور جھگڑوں کا باعث بنتا ہے۔بہت سے لوگ ان سے بات چیت کرنے سے اس لئے گریزاں ہوتے ہیں کہ یہ افراد ذرا سی بات پر کوئی نہ کوئی اختلاف کا پہلو نکال لیتے ہیں ، ان سے وہی لوگ کامیاب گفتگو کر سکتے ہیں جو ان کی اس خامی سے واقف ہوں۔ وہ ان کے اختلاف کو بڑی خوب صورتی سے نظر انداز یا رد کر دیتے ہیں۔

نکتہ چینی

حمل افراد کی ایک خرابی یہ بھی ہے کہ یہ اکثر دوسروں کی خامیاں اور کمزوریاں ڈھونڈتے رہتے ہیں اور اس حوالے سے ان پر نکتہ چینی بھی کرتے ہیں۔جس طرح دیگر کچھ برجوں سے تعلق رکھنے والے افراد دوسرو ں کو طنزاور تنقید کا نشانہ بناتے ہیں،اسی طرح حمل افرادمیں بھی یہ عادت پائی جاتی ہے لیکن یہ لوگ اپنی اس خامی پر قابو پانے کی بھی قدرت رکھتے ہیں۔

محتاط

ویسے تو یہ افراد اکثر اوقات کسی کام کی تکمیل میں غیر محتاط رویہ اختیار کر لیتے ہیں،اس وقت یہ صرف اور صرف مقصد کا حصول چاہتے ہیں لیکن عام حالات میں بڑے محتاط ہوتے ہیں،ہر کام بہت سوچ سمجھ کر کرتے ہیں،جس کام میں خطرہ نظر آئے اس میں اپنی فطرت کے مطابق ہاتھ ضرور ڈالتے ہیں لیکن نہایت محتاط انداز میں۔

خودنمائی

انہیں خودنمائی کی بڑی خواہش ہو تی ہے۔جس طرح دیگر کچھ برجوں سے تعلق رکھنے والے افراد خودنمائی کے شوقین ہوتے ہیں،اسی طرح انہیں بھی یہ عادت ہوتی ہے۔اس معاملے میں اکثر غلط ذرائع کا استعمال کرتے ہیں اور غلط راستوں کا انتخاب بھی کر لیتے ہیں ، یہ الگ بات ہے کہ انہیں بعد میں اپنے اس رویے پر پچھتانا پرتا ہے۔یہ خود کو نما یاں اور ممتاز کرنے کے چکر میں اکثر دوسرں کو کوتاہ نظر ثابت کرنے سے بھی دریغ نہیں کرتے اور دیگر طریقوں سے بھی انہیں کم تر ثابت کرنا چاہتے ہیں۔ان کے اس رویے سے بھی اکثر لوگ ان سے کنارہ کش ہو جاتے ہیں۔

ذہن کی پختگی

یہ لوگ برج حوت کی طرح دہری شخصیت کے مالک ہوتے ہیں۔لیکن برج حوت سے تعلق رکھنے والے افراد ہاں یانہ کے قائل ہوتے ہیں ، اگر ان کا منفی رویہ ہے تو وہ انتہا پسندانہ ہوتا ہے اگر مثبت روہ ہے تو بھی انتہا پسندانہ ہو گا جبکہ برج حمل سے متعلق افراد کا ایک رویہ اور منجھا ہوا ہے جبکہ دوسرا رویہ غیر پختہ اور بچگانہ سا،اس برج سے تعلق رکھنے والے افرادمیں الگ الگ رویے پائے جاتے ہیں لیکن کسی ایک فرد میں بھی یہ دونوں رویے پائے جاتے ہیں۔

خطرات سے کھیلنے والے

بلاشبہ یہ خطرات سے کھیلنے والے ہوتے ہیں۔ یہ خطر ناک سے خطر ناک کام کرنے سے بھی نہیں گھبراتے۔ یہ بے خوف لوگ ہوتے ہیں۔یا یوں کہا جائے کہ جس طرح خوف دوسرے لوگوں پر غالب آجاتا ہے۔ ان پر اس طرح اثر انداز نہیں ہوتا بلکہ بہت کم ہوتا ہے۔یہ لوگ خوف پر قابو پا لینے کے ماہر ہوتے ہیں۔

وقت کا ا حساس

ان لوگوں کو وقت کے قیمتی ہونے کا بڑا احساس ہوتا ہے۔ ان کی کو شش ہوتی ہے کہ ایک ایک لمہے کو کسی کام میں مصروف کر لیتے ہیں۔اسی لئے یہ مختلف کاموں میں الجھے نظر آتے ہیں۔ یہ ایک کام سے فارغہونے کے باد کسی دوسرے کام میں صروف ہو جانا پسند کرتے ہیں۔

زندگی کا مقصد

یہ لوگ اپنی زندگی کا کوئی نہ کوئی مقصد بنا لیتے ہیں اور پھر اپنے مقصد کی خاطر یہ انتھک اور شبانہ روز محنت کرتے۔اپنے راستے میں آنے والی ہر رکاوٹ کو دور کرنا بخوبی جانتے ہیں۔ اگر کوئی انہیں ان کے مقصدسے ہٹانے کی کوشش کرے تو اسے پہچان لیتے ہیں اور اس سے بڑی سختی سے نمٹتے ہیں ورنہ کم سے کم اس سے تعلقات تو ختم کر ہی لیتے ہیں۔

عملی

جس طرح کئی دیگر برجوں سے تعلق رکھنے والے افراد خوابوں کی دنیا میں رہنا پسند کرتے ہیں ، حمل افراد ان کے بر عکس ہوتے ہیں ، یہ عملی لوگ ہوتے ہیں ۔یہ خوابوں کی دنیاسے دور رہنے کے ساتھ ساتھ ان لوگوں سے بھی دور رہتے ہیں جو خوابوں کی دنیا میں رہنے والے ہوتے ہیں۔ہاں ان لوگوں سے ان کی اچھی دوستی ہوتی ہے جو ان کی طرح عملی ہوتے ہیں۔یہی وجہ سے عقرب اور سنبلہ افراد ان کے بہترین دوست ثابت ہوتے ہیں۔

یہ لوگ تقدیر سے زیادہ تدبیر پر یقین رکھتے ہیں۔جن باتوں کو دوسرے لوگ تقدیر کا لکھا کہہ کر اس پر صبر کر لیتے ہیں ، حمل افراد ایسی باتوں کو تقدیر کا لکھا نہیں بلکہ تدبیر سے تعبیر کرتے ہیں ، ان کا کہنا ہوتا ہے کہ اگر اچھی تدبیر کر لی جائے تو یہ کام سنور سکتا ہے۔

ناکامی کونا پسند کرنے والے

یہ افراد ناکامی کو سخت نا پسند کرتے ہیں بلکہ یہ کہنا بے جانہ ہو گا کہ کام میں یہ ناکامی کے پہلو کو سرا سر نظر انداز کر دیتے ہیں ، ان کے سامنے صرف اور صرف کامیابی ہوتی ہیاور یہ اس کامیابی کو حاصل کرنے کے لئے اتنی محنت کرتے ہیں کہ ناکامی خود بخود ان کے پیروں تلے روندی جاتی ہے

 

قارئین!
گزشتہ صفحات پر ہم نے حمل افراد کے بارے میں ایک سرسری جائزہ لیا جس سے یقیناًان کے بارے میں مکمل طور پر آگاہی ممکن ہے اس لئے اب ہم ان افراد کے بارے میں تفصیل میں جانتے ہیں جس سے برج حمل سے تعلق رکھنے والے افرادنہ صرف خود اپنے بارے میں مختلف معلومات حا صل کر سکیں گے بلکہ دیگر بر جوں سے تعلق رکھنے والے بھی ان کے متعلق جان سکیں گے۔

ہر ماحول میں دھلنے والے

ان لوگوں میں ایک عجیب خصوصیت ہوتی ہے کہ یہ خود کو ہر ماحول میں ڈھال لیتے ہیں۔زندگی کاکوئی بھی شعبہ ہو ، ان کا رویہ وہاں کار فرما نظر آتا ہے ، اگر کوئی محفل سنجیدہ ہو تو یہ سنجیدہ گفتگو کر کے دوسروں کو اپنی جانب متوجہ کر لیتے ہیں اور اگر کہیں ہنسی مذاق چل رہا ہو تو اچھا ہنسی مذاق کر لیتے ہیں ، کسی دفتر میں کام شروع کریں وہاں کا جیسا ماحول ہو اس کے مطابق اپنی عادت واطوار بنا لیتے ہیں ، اس طرح دیگر شعبوں میں بھی ان کا یہی حال ہوتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ ان کے حلقۂ ا حباب میں ہر طرح کے لوگ ہوتے ہیں۔

پھر تیلے اور چاق و چوبند

یہ افراد پھر تیلے اور چاق و چوبند ہوتے ہیں۔اگر یہ کھیل کے میدان میں ہوں تو ان کی کارگردگی دوسروں سے مختلف ہوتی ہے۔فوج یا پولس میں ہوں تو اپنے ساتھیوں سے زیادہ پھر تیلے اور مستعد نظر آتے ہیں۔ زندگی کے عام معا ملات میں بھی ان کا یہی حال ہوتا ہے۔ اگر دفتر کا کام کر رہے ہیں تو تب بھی اگر خریداری کر رہے ہیں تو تب بھی ان کی تیز ی طرازی اور پھر تیلا پن واضح نظر آتا ہے۔غرض اس لحاظ سے یہ ہر جگہ منفرد ہی نظر آتے ہیں۔

پر تجسس

ان میں تجسس بہت زیادہ ہوتا ہے۔یہی وجہ ہے کہ یہ لوگ آثار قدیمہ ، شکا ریات اور دیگر ایسے شعبوں میں بڑی دلچسپی رکھتے ہیں ، انہیں کائنات کے اسرار جان لینے کی بڑی خواہش ہوتی ہے، یہ اکثر سا ئنسی میگزین مطالہ کرتے نظر آتے ہیں بلکہ اکثر لوگ تو خود کوئی نہ کوئی چیز دریافت کرنے کی کوشش میں بھی مصروف نظر آتے ہیں یا پھر کسی چیز میں جدت طرازی میں مصروف دکھائی دیتے ہیں۔

قوت فیصلہ

ان میں بڑی قوت فیصلہ ہوتی ہے۔کسی بھی قسم کے حا لات میں یہ بڑے درست فیصلے کرتے ہیں ۔لوگ ان کی اس عادت پر بڑے حیران بھی ہوتے ہیں اور کوفت بھی محسوس کرتے ہیں کہ یہ لوگ ذرا دیر میں اپنے فیصلے بدل لیتے ہیں۔دراصل یہ ان کی بری عادت نہیں بلکہ اچھی عادت ہوتی ہے۔ یہ حا لات کے مطابق اپنے فیصلوں میں تبدیلی کرتے رہتے ہیں جبکہ لوگ یہ سمجھتے ہیں کہ ان میں قوت فیصلہ نہیں ہے جبکہ وہ نہیں جانتے کہ یہ افرد بڑی زبردست قوت فیصلہ کے مالک ہوتے ہیں۔

کینہ اوربغض سے پاک

یہ لوگ کسی بھی قسم کا کینہ نہیں رکھتے، اگر ان سے کسی سے تلخ کلامی ہو جائے تو اس وقت برا بھلا کہہ لیں گے ، اس سے ہا تھا پائی کر لیں گے لیکن پھر یہ اس واقعہ کو اپنے ذہن میں نہیں رکھیں گے اور نہ ہی اس افراد کے خلاف کوئی کینہ یا بغض اپنے ذہن میں رکھیں گے بلکہ اگر سامنے والا شخص ان سے صلح یا مفا ہمت کرنا چاہے تو یہ بخوبی قدم اٹھاتے ہیں۔

عشق و محبت

ان لوگوں کی یہ کمزوری ہوتی ہے کہ یہ پہلی ہی نظر میں گھائل ہو جاتے ہیں اور صنف مخالف سے ٹوٹ کر محبت کرنے لگتے ہیں لیکن جب کسی بھی وجہ سے انہیں ذرا سی مایوسی ہو جائے تو یہ فورا اپنی ساری محبت بھول جاتے ہیں ، ایسے میں یہ کسی دوسری عورت کی طرف راغب ہونے میں دیر نہیں لگاتے اور پھرجلد ہی اس سے بھی کسی نہ کسی وجہ سے کنارہ کشی اختیار کر لیتے ہیں ، بہر حال کوئی نہ کوئی عورت ان کے معیار پر پوری اتر ہی جاتی ہے۔

بلند حوصلہ

ان میں حوصلے کی بھی کمی نہیں ہوتی ہے۔ یہ ایسے ایسے کام کرلیتے ہیں جو حوصلہ مند افراد ہی کر سکتے ہیں۔اگر خدا نخواستہ کسی بلڈنگ میں آگ لگ جائے تو یہ ان افراد میں سے نہیں ہوں گے جو بچاؤ کا شور مچاتے ہیں۔ یہ اگر بلڈنگ کے اندر ہوں تو ان کے حوصلے پست نہیں ہوتے ، یہ نہ صرف خود کو بچانے کی کوشش کرتے ہیں بلکہ دوسرں کی جان بچانے کے لئے سر گرداں ہو جاتے ہیں۔اگر بلڈنگ کے باہر ہوں تو اندر داخل ہو کر لوگوں کی مدد کرنے کی کو شش کرتے ہیں۔اپنی حوسلہ مند طبعیت کی وجہ سے یہ فوج میں پولس اور دیگر جگہوں پر اہم کارنامے سر انجام دیتے ہیں۔

با اعتماد

یہ بڑے با اعتماد ہوتے ہیں۔زندگی کے کسی بھی معاملے اور مرحلے پر بڑے اعتماد کا مظاہرہ کرتے ہیں۔اگر انٹرویو ہو تویہ بڑے اعتماد کے ساتھ جوابات دیتے ہیں۔اگر کسی جلوس کی قیادت کرنی ہو تو تب بھی بڑے اعتماد کے ساتھ فرائض انجام دیتے ہیں۔ غرض یہ کہ جہاں بھی ہوں،بڑے با اعتماد نظر آتے ہیں۔

مختصر گفتگو کے قائل

یہ لوگ مختصر بات کہنا اور سننا پسند کرتے ہیں۔ اگر کوئی ان کے سلسلے میں طویل گفتگو کرنے کی کو شش کرے تو اسے بے دھڑک ٹوک دیتے ہیں اور اسے ہدایت کرتے ہیں کہ وہ ٹو دی پوائنت بات کریں۔ان کی تحاریر اور گفتگو میں ان کی عادت بڑی واضح نظر آتی ہے۔

قوت برداشت سے عاری

ان میں قو ت برداشت بہت کم ہوتی ہے ۔زرا زرا سی بات پر مشتعل ہو جاتے ہیں۔جو لوگ ان کی اس کمزوری سے واکف ہوتے ہیں وہ ان سے مختلف فوائد حاصل کرتے رہتے ہیں ۔انہیں آسانی سے کسی کے خلاف بڑکا کر استعمال کیا جا سکتا ہے۔زندگی کے دیگر معملات میں بھی یہ قوت برداشت سے عاری ہوتے ہیں۔

اپنے آپ میں مگن

یہ لوگ اپنے آپ میں مگن رہنا پسند کرتے ہیں۔یہ وہ کچھ کرتے ہیں جو ان کی مرضی ہوتی ہے۔یہ نہیں چاہتے کہ لوگ ان کے معملات میں دخل اندازی کریں ۔انہیں اس بات کی پروا بھی نہیں ہوتیکہ جو کچھ یہ کر رہے ہیں اس کے نتائج مثبت نکلیں گے یا منفی۔ یہ اپنی دھن کے پکے ہوتے ہیں،جس کام کو کرنے کی ٹھان لیں اسے ہر ہال میں کرنا چاہتے ہیں۔ انہیں اس کے نفع یا نقصان کی فکر نہیں ہوتی۔ یہ دوسروں کے مشورے بھی نہیں سننا چاہتے۔

ذہانت

ان لوگوں میں بڑی ذہانت ہوتی ہے۔یہ زندگی کے معملات پر بڑ ی گہری نظر رکھتے ہیں۔یہ ہر کام بہت سوچ سمجھ کر کرتے ہیں۔ لیکن بہرحال یہ اس کام کے نتائج کے بارے میں زیادہ فکر مند نہیں ہوتے ، انہیں اگر کسی کام کے بارے میں یہ اندازہ ہو کہ وہ انہیں فائدہ دے گا تب بھی یہ اپنی دلچسپی کی وجہ سے اس کر ڈالتے ہیں ، اس طرح انہیں تسکین ملتی ہے ، ساتھ ہی یہ یوں بھی مطمئن ہوتے ہیں کہ کم سے کم انہیں تجربہ تو حاصل ہو گیا۔

خوش اخلاق

یہ عجیب سی بات ہے کہ حمل افراد جہاں تحکمانہ مزاج رکھتے ہیں و ہیں یہ خوش اخلاق بھی ہوتے ہیں۔اکثر ان سے گفتگوکرنے والوں کو یہ جان کر بڑا تعجب ہوتا ہے کہ یہ وہی لوگ ہیں جو ذرا دیر پہلے ان پر حکم چلانے کی کو شش کر رہے تھے۔ ان کا فلسفہ ہے کہ خوش اخلاقی اور حکم چلانا اپنی اپنی جگہ ضروری ہیں۔ یوں یہ دہرے مزاج کے حامل نظر آتے ہیں۔

ہمدرد اور خدمت گار

یہ لوگ بہت ہمدرد اور خدمت گار ہوتے ہیں۔ یہ دوسروں کو تکلیف میں دیکھ کر ان کی تکلیف کو محسوس کرتے ہیں اور ان کی جس قدر مدد کر سکتے ہیں کرتے ہیں۔اگر کوئی عزیز بیمار ہو جاے تو اس کی خدمت گزاری بھی کرتے ہیں۔اس عادت کی وجہ سے ے اپنے حلقہ احباب میں خاصے مقبول ہوتے ہیں۔

پر جوش

یہ افراد خاصے پر جوش ہوتے ہیں۔ جن امور میں ان کی دلچسپی ہوتی ہے ان مین بڑے جوش و خروش کا مظاہرہ کرتے ہیں۔ اگر یہ لیڈر ہوں توان کی تقاریر میں ان کا جوش اور ولو لہ واضح نظر آتا ہے اور یہ صرف جوش ہی نہیں دیکھاتے بلکہ ان کے جوش کے ساتھ ساتھ ان کا ہوش بھی پوری طرح کار فرما ہوتا ہاے اور یہ مدلل گفتگو کرتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ دوسرں کو جلدہی قا ئل کر لیتے ہیں اور لوگ ان سے متا ثر ہو کر ان کی بات مانتے ہیں۔

تحکما نہ طبیعت

یہ تحکمانہ طبیعت کے ما لک ہو تے ہیں۔ان کی یہ خواہش ہو تی ہے کہ لوگ ان کے اشاروں پر چلیں۔ان کی اس عادت کی وجہ سے اکثر ان کی تلخ کلامی اور جھگڑا بھی ہوتا ہے کیونکہ بے شمار لوگ ایسے ہوتے ہیں جو خود تحکما نہ مزاج رکھتے ہیں۔وہ ان کے حکم کو ماننے کی بجائے ان سے سختی سے پیش آتے ہیں ،یوں بات بگڑ جاتی ہے۔ اکثر لوگ حمل افراد کی اس عادت کی وجہ سے ان سے دور رہنے لگتے ہیں ، اگر ان کا ملنا ضروری ہو تب بھی ان کی کو شش ہوتی ہے کہ جلد از جلد کام کی بات کر کے ان لوگوں کے پاس سے دور چلے جائیں۔

محنتی

حمل مرد بہت محنتی ہوتے ہیں۔اگر یہ کوئی کام کرنے کی ٹھان لیں تو ان کے نزدیک رات دن کی کوئی تفریق نہیں رہتی ، ان کے سامنے بس ایک ہی مقصد ہوتا ہے کہ کسی طرح سے اپنا کام مکمل کر لیا جائے۔اگر یہ کہا جائے کہ اپنے کام کی تکمیل کے لئے یہ دیوانے ہو جاتے ہیں تو بے جانہ ہو گا۔جس طرح دیگر کئی بر جوں سے تعلق رکھنے والے افراد محنت سے جی چراتے ہیں ، اس کے بر عکس حمل افراد محنت سے فرار حاصل نہیں کر تے بلکہ دور ان کا ر ان کا جزبہ یکساں رہتا ہے۔کسی بھی مر حلے پر یہ کام کو معطل یا ترک کر دینے پر راضی نہیں ہوتے۔یہ اپنا کام مکمل کر کے ہی دم لیتے ہیں۔

ایماندار اورد یا نت دار

یہ فطری طور پر ایمان دار اور دیانت دار ہوتے ہیں۔ ان کاے ا حسباب اسی سے ان سے حوش رہتے ہیں کبھی کسی کو دھوکہ نہیں دیتے۔ یہ ایماندار کاموں سے دلی تسکین محسوس کرتے ہیں۔جبکہ بے ایمانی اور مکاری سے یہ بے چین ہو جاتے ہیں۔انہیں دھوکہ دینا پسند نہیں ہے اور نہ ہی یہ کسی کی طرف سے دھوکہ برداشت کر سکتے ہیں اگر کوئی ان سے دھوکہ کے تو اس سے سختی سے نمٹتے ہیں ، اگر ان کے خلاف کچھ نہ کر پائیں تو کم سے کم یہ ضرور کر تے ہیں ک ان سے گفتگو منقطع کر دیں یا ان سے کنارہ کر پائیں تو کم سے کم یہ ضرور کرتے ہیں یا ان سے کنارہ کش ہو جاہیں۔

باہمت

یہ بڑے با ہمت لوگ ہوتے ہیں۔ انہیں نا کا میوں سے نفرت ہوتی ہے اور یہ کا میا بیو ں کے لئے بڑی محنت کرتے ہیں۔ ایسے امور جو چیلنج رکھتے ہوں ، ان کے لئے دلچسپی کا با عث ہوتے ہیں مثلا اگر انہیں کوئی چیلنج کر دے کے تم موت کے کنو یں میں موٹر سائیکل نہیں چلا سکتے تو اس صورتمیں اکر اس بات کو سنجیدگی سے لیتے ہوے چیلنج کو قبول کر لیں تو اس بات کے بھر پور امکانات ہوتے ہیں کہ جلد یا بد یر موت کے کنویں میں موٹر سا ئیکل چلاتے نظرآ جائیں۔ اس زندگی کے دیگر شعبوں میں بھی بڑ ے حوصلہ مند نظر آ جاتے ہیں۔

فراخ دل

فراخ دلی ان کی فطرت کا ایک حصہ ہے ۔یہ لوگ زیادہ رقم پس انداز نہیں کر تے ہیں۔محنت سے کماتے ہیں اور کھلے ہاتھ سے خرچ کر تے ہیں۔ اکثر اپنی اس عادت کی وجہ سے مسائل کا شکار ہو جاتے ہیں کیونکہ کسی کڑے وقت کے لئے ان کے پاس مناسب رقم نہیں ہوتی ہے۔اس لئے جب ایسا وقت آتا ہے تو یہ پریشان ہو جاتے ہیں ، تب یہ حلقۂ احباب سے رجوع کرتے ہیں ، اسے میں انہیں یہ بھی پہچان ہو جاتی ہے کہ کون ان کے ساتھ مخلص ہے اور کون نہیں ہے۔تاہم یہ اس مشکل وقت سے نکل جانے کے بعد بھی کھلے ہا تھ سے خرچ کرنے کی عادت کو بدل نہیں پاتے۔

حاسد

ان میں حسد کا جذبہ ویسے فطری طور پر نہیں ہوتا ہے لیکن اکثر مواقع پر یہ حسد کر جاتے ہیں خاص طور پر جب کوئی ان سے کسی بھی طرح آگے نکلتا نظر آئے یہ چونکہ نمایاں اور ممتار رہنا پسند کرتے ہیں اس لئے کسی صورت میں یہ برداشت نہیں کر سکتے کہ کو ئی ان سے کسی بھی معاملے میں آگے نکل جائے اس لئے یہ حسد کا شکار ہو جاتے ہیں اور دوسرے کو نیچا دکھانے کے لئے اکثر ایسی حرکتیں کرنے لگتے ہیں جو مضحکہ خیز بھی ہوتی ہیں

کام کے ماہر

یہ لوگ جس کام میں بھی دلچسپی لیتے ہیں ، اس میں مہارت حاصل کر لیتے ہیں۔ اس کی وجہ یہ ہوتی ہے کہ ہر کام کو بڑی دلجمعی ، دلچسپی اور لگن کے ساتھ کرتے ہیں ، اس کی جزئیات پر غور کرتے ہیں۔

درست اندازہ

ان کے اندریہ خصوصیت بھی ہوتی ہے کہ یہ درست اندازے لگاتے ہیں۔ بہت کم ایسا ہوتا ہے کہ ان کا کوئی اندازہ غلط ثابت ہو۔ ان کی اس صلاحیت کی وجہ سے انہیں بہت فائدہ ہوتا ہے اور یہ آنے والے کئی خطرات سے بچ جاے ہیں، ساتھ ہی یہ دوسروں کو بھی خطرات سے بچا لیتے ہیں

خراب صحت

ان کی صحت بسا اوقات خراب رہتی ہے۔اس کی وجہ ان کے سیارے کے اثرات نہیں بلکہ ان کی شبانہ روز محنت اور مشقت ہوتی ہے۔ یہ ہم بتاہی چکے ہیں کہ یہ جو کام کرنے کے ٹھان لیں ، اسے پایہ تکمیل تک پہنچانے کے لیے انتھک محنت کرتے ہیں ، یہ اپنی طاقت سے زیادہ کام کر لیتے ہیں جس کی وجہ سے ان کی صحت پر اثر ات پڑتے ہیں جس کا نتیجہ کسی بھی بیماری کی صورت میں ظاہر ہوتا ہے۔

خاموشی

یہ تو ہم لکھ چکے ہیں کہ یہ افراد مختصر اور با مقصد گفتگو کو پسند کرتے ہیں ، ساتھ ہی ان کی ایک خصوصیت یہ بھی ہوتی ہے کہ لوگ جونہی محسوس کرتے ہیں کہ ان کے مطلب کی گفتگو ختم ہو چکی ہے تو یہ فوراٌ گفتگو کہ ختم کردینا پسند کرتے ہیں اور اگر ایسا کرنا ممکن نہ تو یہ خاموشی اختیار کر لیتے ہیں ، سامنے والا سمجھتا ہے کہ وہ ان کی گفتگو سن رہے ہیں لیکن ان لوگوں کا دما غ کہیں اور ہوتا ہے۔ یہ اپنے خیالوں میں کھو جاتے ہیں۔بالا آخر سامنے والے کو احساس ہوتا ہے کہ یہ افراد ان کی طرف متوجہ نہیں ہے لہذا وہ خود ہی گفتگو کو سمیٹ لیتا ہے۔اس کے علاوہ بھی یہ لوگ اکثر خاموش رہ کر اپنے خیالات کی دنیا میں جانا پسند کرتے ہیں جہاں انہیں بڑی تسکین ملتی ہے۔

ہمدرد

یہ لوگ ہمدردی کا وصف بھی رکھتے ہیں۔ یہ دوسروں کو تکلیف میں نہیں دیکھ سکتے۔ اگر کوئی اپنی کسی پریشانی کا اظہار ان سے کرے تو ان کی کو شش ہو جاتی ہے کہ اسے کسی طرح اس پریشانی سے نجات دلا دیں۔ اپنی اس عادت کی وجہ سے یہ اچھے ڈاکٹر ، سو شل ورکر اور دیگر اس طرح کے کاموں میں بہت کامیاب رہتے ہیں

فضول خرچ

ان میں جہاں بہت سی خوبیاں اور خامیاں ہوتی ہیں ان ہی میں ایک خامی یہ بھی ہوتی ہے کہ یہ اکثر فضول خرچی کی طرف مائل ہو جاتے ہیں۔اگر یہ اپنی اس عادت پر کنٹرول نا کریں تو مقروض کنگال بھی ہو جاتے ہیں لیکن چونکہ با ہمت اور با صلا حیت ہوتے ہیں اس سے پھر اپنے حالات کو سدھار لیتے ہیں۔فضول خرچی کی وجہ سے بار بار چوٹ کھانے کے باوجود پھر یہ حرکت کر بیٹھتے ہیں۔یہ لوگ چونکہ خودنمائی کے شوقین ہوتے ہیں اس کے لئے اکثر ان کی فضول خرچی کی وجہ مہنگی چیزوں کی خریداری ، بڑی تقریبات کا انعقاد ، کسی بڑے کاروبار کا آ غاز پھر ایسی ہی وجو ہات ہوتی ہیں

تخلیق کار

ان کا ذہن تخلیقی صلاحیتوں سے مالا مال ہوتا ہے۔ یہ آگے سے آگے بڑھنے کی خواہش رکھتے ہیں۔ مصوری، گلو کاری ، کھیل ، اور دیگر تخلیقی کاموں میں بہت دلچسپی کا مظاہرہ کرتے ہوئے کامیابی کی منازل طے کر جاتے ہیں۔کوئی بھی شعبہ ہو ان کی کارگردگی منفرد نظر آتی ہے۔یہ اپنی اس تخلیقی صلاحیت کی وجہ سے جو بھی منصوبے بناتے ہیں وہ بھی انفرایت کے حامل ہوتے ہیں جنہیں دیکھ کر لوگ حیران اور ششدر رہ جاتے ہیں

جدت پسند

یہ جدت پسند ہوتے ہیں۔یکسانیت انہیں بیزار کر رہی ہوتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ زیادہ عرصہ ایک کار نہیں رکھ سکتے ، ایک طرح کا سوٹ نہیں پہن سکتے ، ایک طرح کی غذا نہیں کھا سکتے۔ یہ تبدیلی اور جدت کے خواہش مند ہوتے ہیں۔سائنس اور دیگر تخلیقی معاملات سے گہرا لاگا ؤ رکھتے ہیں۔انہیں یہ جاننے کی خواہش ہوتی ہے کہ دنیا میں کیا کیا نئی ایجادات ہو رہی ہیں۔یہ اس سلسلے میں دنیا بھر کے رسالے اور کتابیں وغیرہ کی نمائش میں بھی جاتے ہیں

ادب اور فنون سے لگاؤ

انہیں ادب اور مختلف فنون سے بڑا لگا ؤ ہوتا ہے۔یہ دنیا بھر کاے ادب کا مطالعہ کرتے ہیں ، اس کے علاوہ مختلف فنون کے علاوہ مختلف فنون پر بھی ان کی گہری نگاہ ہوتی ہے۔ ان کی خواہش ہوتی ہے کہ یہ اپنے علم میں زیادہ سے زیادہ اضافہ کریں۔یہ تعلیم یافتہ لوگوں کی محفلوں میں آتے جاتے رہتے ہیں۔اس کے علاوہ ادیبوں، شاعروں اور فنکاروں سے ان کا بڑایارانہ ہوتا ہے، یہ فنکاروں اور ادیبوں وغیرہ کی بڑی قدر کرتے ہیں اور انہیں کسی نہ کسی طرح فائدے پہنچات رہتے ہیں

پر عزم

یہ لوگ پر جوش ، ذہین اور محنتی ہونے کے ساتھ ساتھ پر عزم بھی ہوتے ہیں ، یہ جس بات کا عزم کر لیں اس سے انہیں دست بردارکرنا نا ممکن ہوتا ہے، یہ اسہنی عزم رکھتے ہیں

دباؤ سے نفرت

یہ اپنے اوپر کسی قسم کے ذہنی دباؤ کو پسند نہیں کرتے ۔اگر کوئی ان پر دباؤ ڈالنے کی کو شش کرے تو سخت رویے کا مظاہرہ کرتے ہیں۔اس وجہ سے اکثر ان کی تلخ کلامی اور ہاتھا پائی بھی ہو جاتی ہے۔یہ آزاد طبع ہوتے ہیں۔آزاد فضاؤں میں سانس لینا پسند کرتے ہیں۔یہ نہ دوسروں پر کسی قسم کا دباؤ ڈالتے ہیں اور نہ کسی کا دباؤ برداشت کرتے ہیں

اعلی خیالات

یہ لوگ زندگی کے ہر معاملے میں اعلی خیالات رکھتے ہیں۔گھٹیا سو چوں اور لوگوں سے دور رہتے ہیں۔یہی وجہ ہے کہ شراب نوشی ، جوئے ، منشیات اور دیگر اس طرح کی لعنتوں سے دور رہتے ہیں۔صاف ستھرے ماحول کو پسندکرتے ہیں ، گندی جگہوں سے دور بھاگتے ہیں ، اچھی خوراک کھاتے ہیں ، چھوٹے مو ٹے ہو ٹلوں میں بیٹھنے کے بجائے اچھے اور صاف ہو ٹلوں میں بیٹھتے ہیں۔صاف کپڑے پہنتے ہیں ، ان کے بال ترتیب سے رہتے ہیں اور جوتے پالش کئے ہوتے ہیں۔آزاد فضاوں میں سانس لینا پسند کرتے ہیں۔یہ نہ دوسروں پر کسی قسم کا دباؤ ڈالتے ہیں اور نہ ہی کسی کا دباؤ برداشت کرتے ہیں

نمبر ون

ان کی خواہش ہوتی ہے کی جس بھی معا ملے میں دلچسپی لیں ، اس میں نمبرون رہیں۔اس سے کم درجے کو پسند نہیں کرتے۔نمبرون رہنے کے لئے بہت زیادہ محنت اور مشقت بھی کرتے ہیں اور اکثر اپنی اس خواہش کے تکمیل میں کامیاب بھی ہو جاتے ہیں۔اگر یہ ناکام رہیں تو بہت افسردہ اور مایوس ہوتے ہیں لیکن زیادہ دیر ان کیفیات کا شکار نہیں رہتے۔ ان کی فطرت کاجارحانہ پن ابھر کر سامنے آتا ہے اور پر جوش فطرت میں ہلچل مچ جاتی ہے اور یہ ایک بار پھر کامیابی کے لئے کمر بستہ ہو جاتے ہیں اور انہیں اس وقت تک چین نہیں آتا جب تک ان یہ کامیاب نہیں ہو جاتے

ذہانت سے بھر پور

یہ لوگ ذہانت سے بھر پور ہوتے ہیں اور اپنی ذہانت مختلف معا ملات میں بڑے بھر پور انداز میں استعمال کرتے ہیں۔یہی وجہ ہے کہ تعلیمی میدان میں بھی شروع سے کامیاب رہتے ہیں اور اپنی کلاسوں میں اچھے نمبروں سے پاس ہوتے ہیں ۔کھیل ہویا سماجی کام یا پھر زندگی کے دیگر معاملات ، یہ اپنی ذہانت کی وجہ سے بڑی بڑی کامیابیاں حاصل کرتے ہیں

 

قارئین!
گزشتہ صفحات پر ہم نے حمل افراد کے بارے میں ایک سرسری جائزہ لیا جس سے یقیناًان کے بارے میں مکمل طور پر آگاہی ممکن ہے اس لئے اب ہم ان افراد کے بارے میں تفصیل میں جانتے ہیں جس سے برج حمل سے تعلق رکھنے والے افرادنہ صرف خود اپنے بارے میں مختلف معلومات حا صل کر سکیں گے بلکہ دیگر بر جوں سے تعلق رکھنے والے بھی ان کے متعلق جان سکیں گے۔

حمل خواتین کی خصوصیات

قارئین!
گزشتہ صفحات پر ہم نے حمل مردوں کی خصوصیات کا جائزہ لیا۔حمل خواتین میں بھی ان سے ملتی جلتی بے شمار خصوصیات پائی جاتی ہیں لیکن خواتین ہونے کے ناطے وہ اپنا الگ تشخص اور پہچان رکھتی ہیں۔ آئیے ان کی خصوصیات کا بھی جائزہ لیتے ہیں

حمل افراد کے لئے خصوصی ہدایات

حمل افراد میں جہاں بہت سی خوبیاں ہوتی ہیں وہیں ان میں بے شمار خامیاں بھی پائی جاتی ہیں۔اگر یہ افراد ان خامیوں پر قابو پا لیں تو کامیاب زندگی گزار سکتے ہیں ۔ہم ان کے لئے ذیل میں خصوصی ہدایات درج کر رہے ہیں جن سے یہ استفادہ کر سکتے ہیںخود غرضی سے گریز کریں۔
اگر کسی پر احسان کریں تو اسے جتائیں نہیں۔
کبھی کبھار آپ دوسروں پر اندھا اعتبار کر لیتے ہیں ، اس معاملے میں محتاط رہیں۔
شوہر بیوی یا کسی اور پر بلا وجہ شک زندگی کو تلخ بنا سکتا ہے اس سلسلے میں خود پر قابو پائیں۔
خطرناک کاموں میں بہت سوچ سمجھ کر ملوث ہوں ، بے احتیاطی آپ کے کئے نقصان کا سبب بن سکتی ہے۔
عجلت سے کام لینے کے بجائے سوچ سمجھ کر کام کرنے کی عادت ڈالیں۔
روحنانیت میں جب تک آپ کا کوئی استاد نہ ہو اس شعبے میں آگے جانے کی کوشش نہ کریں ۔ اس سلسلے میں ذرا سی غلطی آپ کی زندگی کو حیران بنا سکتی ہے اور بڑے نقصان کا اندیشہ ہے۔
کبھی کبھار آپ پر معاشرے سے بغاوت یا دوسروں کو نقصان پہنچانے کے خیالات غالب آسکتے ہیں ، ایسے میں محتاط رہیں اور کسی غلط اقدام سے گریز کریں۔
زیادہ بولنے سے آپ کی شخصیت متاثر ہو سکتی ہے اور لوگ آپ کا مذاق اڑا سکتے ہیں اس لئے اس سے گریز کریں۔
ویسے تو آپ بہت اعتماد اور حوصلہ مند ہیں لیکن کسی وقت آپ پر گھبراہٹ طاری ہو جاتی ہے اور یوں محسوس ہوتا ہے جیسے آپ کچھ نہیں کر سکتے ، آپ میں کوئی صلاحیت نہیں۔ایسی کیفیت سے پریشان ن ہوں ،وقتی ہوتی ہے اور کچھ دیر بعد آپ اس سے آزاد ہو جائیں گے لیکن اس کیفیت کے دوران کسی غلط حرکت سے اجتناب کریں۔
آپ اکثر دوسروں سے حسد محسوس کرتے ہیں ، حسد کرنا بھی کسی صورت میں مناسب نہیں ہے ، یہ خاصہ آپ کی اچھی خاصی شخصیت کو خراب کر سکتی ہے۔ اس سے بچنا آپ کے لئے بہت بہتر ہے۔ آپ باہمت ، ذہین اور حوصلہ مند ہیں ، خود کو حسد کی آگ میں نہ جلائیں بلکہ اپنی صلاحیتوں پر پھروسہ کریں ، آپ خود کو دوسرں سے زیادہ کامیاب اور ممتاز کر سکتے ہیں

 

حمل افراد کے لئے موزوں پیشے

حمل بچوں کو خصوصیات

یہ بچے بہت ذہین ہوتے ہیں۔
جوبات انہیں سکھائی جائے اسے یہ بہت جلد سیکھ جاتے ہیں۔
ان میں کام کی بڑی لگن ہوتی ہے۔
یہ اکثر اوقات دوسرے بچے سے ممتاز نظر آتے ہیں۔
اساتزہ کو ان سے بڑی توقعات ہوتی ہیں۔
یہ تخلیقی کاموں میں بڑی کرم جوشی کا مظاہرہ کرتے ہیں ۔
بے کار بیٹھنا ان کی فطرت میں شامل نہیں اس لئے یہ کسی نہ کسی کام میں مصروف نظر آتے ہیں۔
یہ مشکل سے مشکل کام سے نہیں گھبراتے۔
صفائی کو پسند کرتے ہیں۔
شرارتی بچوں سے دور رہتے ہیں اور محنتی بچے ان کے دوست ہوتے ہیں ۔
یہ چاہتے ہیں کہ ان کے کاموں کی تعریف کی جائے۔
یہ بچے اکثر ایک کام کو ادھورا چھوڑ کر دوسرے کام میں مشغول ہو جاتے ہیں ۔ ان کے سر پرستوں کو چاہئے کہ وہ انہیں اس عادت سے روکیں۔
ان کا مزاج تیز ہوتا ہے، لڑائی جھگڑے سے نہیں ڈرتے اس لئے بڑوں کو چاہئے کہ اگر یہ جھگڑ پڑیں تو انہیں فوراٌ روکیں اور بتائیں کہ لڑنا جھگڑنا اچھی بات نہیں ہوتی۔
یہ بچے ترقی کرنا چاہتے ہیں اور ان کے سامنے کوئی نہ کوئی ٹارگٹ ہوتا ہے جیسے یہ ہٹ کرنا چاہتے ہیں اور خوب محنت کرتے ہیں۔
یہ اچھے کھلاڑی ہوتے ہیں ۔
مصوری کی طرف ان کا جھکاؤ ہوتا ہے۔
یہ گلوکاری کو پسند کرتے ہیں۔
اداکاری بھی انہیں پسند ہوتی ہے۔
یہ کہانیاں لکھنے کی کوشش کرتے ہیں ۔
یہ اچھی کتابیں پڑھنا پسند کرتے ہیں۔
اکثر بچے شرارتیں بھی کرتے ہیں لیکن ان کی شرارتیں زیادہ تر کسی کے لئے نقصان دہ نہیں ہوتیں ، یہ اپنی شرارتوں سے دوسروں کا دل خوش کرنا چاہتے ہیں۔
یہ بے چین طبیعت رکھتے ہیں اس کا اظہار ان کی حرکتوں اور باتوں سے بھی ہوتا ہے۔
یہ سختی سے نہیں بلکہ پیار سے قابو آتے ہیں۔
تخلیقی کاموں میں بڑی دلچسپی لیتے ہیں۔

حمل والدین کا بر تاؤ

یہ اپنے بچوں کا ہر طرح سے خیال رکھتے ہیں۔
یہ بچوں پر سختی کرنا پسند کرتے ہیں۔
بچوں کے لئے سیرو تفریح کا اہتمام کرتے ہیں۔
بچوں کو صاف ستھرا رکھتے ہیں
تعلیمی میدان میں انہیں آگے سے آگے دیکھنا چاہتے ہیں۔
یہ اپنے بچوں کو شرارتی بچوں کے ساتھ دیکھنا پسند نہیں کرتے۔
یہ بچوں کی غذا کا بہت خیال رکھتے ہیں۔
حمل ماں ، حمل باپ، کے مقابلے میں بچوں کے لئے زیادہ حساس ہوتی ہے۔
حمل والدین چاہتے ہیں کہ ان کے بچے اچھی تعلیم حاصل کر کے اعلی مقام حاصل کریں۔
یہ بچوں کے لئے کسی مرحلے پر سفارش کرنا پسند نہیں کرتے ۔ ان کی خواہش ہوتی ہے کہ ان کے بچے محنت سے نام اور مقام حاصل کریں۔
یہ بچوں کو اخلاقیات کا درس دیتے ہیں اور بچوں کو دنیا کے مختلف معاملات اور حالات سے آگاہ کرتے ہیں۔
یہ جان لیتے ہیں کہ ان کے بچوں کا جھکاؤ کس طرف ہے ، وہ اس کے مطابق ان کے لئے مختلف شعبوں کا انتخاب کرتے ہیں ، بچوں پر اپنی مرضی مسلط کرنا پسند نہیں کرتے۔ اگر ان کا بچہ مصور بننا چاہتا ہے تو یہ کبھی اس پر زور نہیں دیں گے کہ وہ ڈاکٹر ، انجینئر یا بزنس مین بنے ، وہ مصوری کے شعبے میں اس کے لئے راہیں ہموار کریں گے۔
یہ بچوں کہ ہر مرحلے پر حوصلہ افزائی کرتے ہیں تا کہ ان میں خود اعتمادی پیدا ہو۔یہ خود انہیں تقریر کرنا اور کھیلنا سکھاتے ہیں۔
اکثر یہ بچوں سے تمام دن کی مصروفیات معلوم کرتے ہیں اور اگر کوئی غلط بات معلوم ہو تو اسے ختم کرنے کی ہدایت کرتے ہیں۔
اکثر بچوں کو خوش کرنے کے لئے خود بھی بچوں کی سطح کی باتیں اور حرکتیں کرنے لگتے ہیں۔
بچوں کو زیادہ دیر تک جاگنے نہیں دیتے تا کہ وہ صبح وقت پر اٹھ سکیں۔
بچوں کے اسکول جاتے رہتے ہیں تا کہ ان کی کار گردگی معلوم ہو سکے۔
ان کی خواہش ہوتی ہے کہ ان کے بچے زیادہ سے زیادہ صحت مندانہ سر گرمیوں میں حصہ لیں۔
یہ بچوں کو اچھی کتابیں فراہم کرتے ہیں تا کہ ان کی معلومات میں اضافہ ہو سکے۔ یہ اکثر بچوں کوکتابوں اور تصویروں کی نمائش میں لے کر جاتے رہتے ہیں۔

برج حمل کے موافق پتھروں کے خواص

پکھراج

پکھراج جیسے فارسی میں قوت ارزق اور ہندی میں پو شپ راگ کہتے ہیں ۔ ایک عمدہ زردرنگ قدیمی جواہر ہے۔ زبان عبرانی میں اسے پت دوہ کہتے ہیں ۔ جس کا مصدرسنسکرت لفظ پیت (معنی زرد) معلوم ہوتا ہے۔یونانی زبان میں اسے ٹوپاسٹیوں (Topasitun)کہتے ہیں ۔جس کا مآخذ لفظ ٹپ دوہ ہے۔جو پت دوہ کا بگڑا ہوا ہے ۔ اس کا انگریزی نام ٹوپاز ایک جزیرہ کے نام پر پڑا ہے جہاں سے پہلے یہ نکلتا تھا۔یہ جزیرہ بحیرہ قلزم میں ہے اور چونکہ اس کے گرد ہمیشہ دھند و غبار رہتا ہے۔ اس لئے اس کا نام ٹوپاز پڑا۔معنی تلاش کرنا پڑا اور اسی سے لفظ ٹوباز نکلا ہے۔کئی دلائل سے ثابت ہوتا ہے کہ یہ جواہر زمانہ قدیم میں مروج تھا۔چناچہ بوتش لکھتا ہے کہ یہ جواہر سبزی مائل زرد رنگ کا ہے۔اور اس کے کئی ایک خواص سحری یمن و برکات مانے جاتے تھے۔یونانی حکماء لکھتے ہیں کہ ’’ پکھراج غم غصہ کو دور کرتا ہے۔بازو پر باندھنے سے جادو کا اثر نہیں ہوتا ہے۔عیاشی سے بچاؤ ہوتا ہے۔‘‘
ماہرین اس کی دو قسمیں بیان کرتے ہیں۔ایک مشرقی دوم مغربی ۔ جس پکھراج میں صرف الیو مینا مرکب ہوتا ہے وہ مشرقی اور جن اقسام میں ۵۷ حصہ الیو مینار اور باقی سلیکا اور فلورائن مرکب ہوں ا نہیں مغربی کہتے ہیں۔کتب سنکسرت میں اس کی چار ذاتیں بیان کی گئی ہیں۔سفید پکھراج ، برہمن ، سرضی مائل کھتری ، زرد رنگ ، ویش اور سیاہی مائل شودر ، متقد مین اسے چرائسو لیٹ کہتے تھے۔پکھراج کی ایک قسم پس نائیٹ نامی ہے جو الٹن برگ سے ملتی ہے۔ ایک اور قسم ہے جیسے فالیولائٹ یا پرائی فائسو لائیٹ کہتے ہیں ۔ یہ تاریک ہوتی ہے ۔ اور گر می سے سوج جاتی ہیں

خواص و ماہیت

۔پکھراج کی کافی شکل قائم الزاویہ متوازی الاضلاع اور مستطیل ہوتی ہے۔
۲۔ اس کی سختی ۸ سے ۹ تک ہوتی ہے ۔ اس لئے یہ بلور کو کاٹ سکتا ہے اور الماس و نیلم سے کاٹا جاتا ہے۔
۳۔چمک اس کی بلورین ہے۔
۴۔اس کا رنگ زرد ، سفید ، نارنجی ، دار چینی ، نیلگوں ، گلابی ، پیا زی ، زرد مائل ، سفید ، پہاڑی سبز ، خوشنما ہوتا ہے۔یہ رنگ جس قدر گہرا ہو اسی قدر قیت زیادہ ہوتی ہے۔گلابی رنگ کے لحاظ سے اس کے یہ نام ہیں۔
۱) گلابی رنگ پکھراج یہ زرد رنگ پکھراج سے اس طرح بناتے ہیں کہ گہرے زرد رنگ پکھراج کو حقہ کی چلم یا کسی چھوٹی کھٹائی میں رکھ کر اور راکھ یا ریت ڈالتے ہیں ۔بعد تھوڑی آنچ دینے سے اس کا رنگ زرد سے گلابی ہو جاتا ہے۔اگر رنگ عمدہ نکلے تو قیمت بڑھ جاتی ہے۔اس کو برازیل کا پکھراج کہتے ہیں۔
۲)سرخ رنگ پکھراج اس رنگ کا پکھراج کامیاب ہوتا ہے۔کرمزی رنگ اکثر دیکھے جاتے ہیں ۔
۳) نیلگوں پکھراج یہ عمدہ خوش رنگ ہوتا ہے اور چنداں نا یاب بھی نہیں ہوتا ۔ہلکے رنگ کے پارے بھدراس کی بجائے خریدے جاتے ہیں۔
۴)سفید انکوائنس نوواس بھی کہتے ہیں ۔ یہ بازو بند ، مالا وغیرہ زیورات میں مزین ہوتا ہے۔
۵)وزن مخصوص ۲ ء ۳ ۔
۶)شفاف و براق۔
۷)طاقت انعکاس۔
۸) ملنے اور گرمی پہنچانے سے طاقت برقی پیدا ہوتی ہے۔ پہلے پہل پکھراج برازیل کے طاقت برقی۱۷۶۰ میں کنٹن نامی ایک شخص نے دریافت کی۔ایب ہائی نے سائیر یا کے پکھراج میں ۲۰ یا ۲۴ گھنٹہ تک رہ سکتی ہے۔سر ڈیو یڈ بر یوسٹر نے ایک ایسے پکھراج کو کاٹنے میں جس میں کئی ایک نشیب تھے اور نشیبوں میں بڑی پھیلنے والی رقیق شے تھی۔ایک عجیب کیفیت دیکھی۔اس کی غرض یہ تھی کہ ایک نشیب پر شگاف لگا کر اور اسے کھول کر اس کے رقیق مادہ کو دیکھے۔نشیب کے کھلنے سے دو نہایت سر عت سے پھیلنے والے رقیق مادے جلائے ہوئے حصہ پر بہنے لگے۔ اور بتدریج پھیلنا اور سکڑنا شروع کیا۔ کبھی تو وہ سکڑ کر قطر ہن جاتے اور کبھی پھیل کر چوڑے ہو جاتے۔ے حرکت جارے رہی حتیٰ کہ و ہ بخارات بن کر اڑ گئے۔ اس میں کچھ شک نہیں کہ یہ حرکت اس طاقت برقی کے باعث تھی جو کاٹنے سے پیدا ہوئی۔
۹)اس میں ۳۸ء۵۸ حصہ الیومینا۔۱ہ ء ۳۴ حصہ سلیکا ۶۱ ء ۷ فلورئین مرکب ہیں۔
۱۰)اگر اسے کوئلہ پر رکھ کر پھونکنی کے ذریعہ آنچ دی جائے تو بھی نہیں پگھلتا۔
ہاں سو ہا گہ کے ساتھ اسے گرمی پہنچائی جائے تو بے رنگ شیشہ کی طرح ہو جاتا ہے۔ اگر اسے تیز گرمی دی جائے تو اس پر بلبلے نمودار ہوتیں ہیں۔ تاریک زردگلابی یا گو میدک جیسے سر خ ہو جاتے ہیں ۔تیز آب کو بالٹ سے یہ نیلے رنگ کا ہو جاتا ہے

الماس ہیرا

اسم معروف : ہیرا ۔فارسی : ماسی ۔ عربی:الماس ، ہندی : ہیرا
ماہیت : سب پتھروں میں سخت پتھر اور بہت نفیس ہے۔
طبیعت: چوتھے درجے میں سردوخشک اور بعض کے نزدیک گرم ہے۔
رنگ وبو: سفید و زرد دو سیاہ سرخ ذائقہ : پھیکا سخت ہوتا ہے۔
مضر : زہر قاتل اور مضر ہے۔ مصلح: قے کرانا تازہ دودھ پلانا
بدل: اس کی دوسری قسمیں نسبت ستارہ: منسوب ہے زہرہ سے۔
نفع خاص : تعلق اس کی مقوی قلب ۔ کامل : زہر قاتل ہے مستعمل نہیں۔
ناقص: زہر قاتل ہے ماکول نہیں۔
افعال و خواص : اس کا لٹکا نا دل کی قوت دینا اور خوف و ڈر کا مانع اور سرعت ولادت کو مفید اور شش پھل صرع کو مفید اور منجن اس کا دانتوں کا مجلی لیکن اس سے پرہیز بہتر ہے۔
قادرمطلق نے الماس کو کیا عجیب شے بنایا۔اس کی چمک دمک آب و تاب دل کو بھاتی ہے۔ کہ ہر ایک شخص دل و جان سے اس کا شائق ہے ۔ قدرت نے اسے ایسا نادر اور بے بہا شے بنا دیا ہے۔ کہ ہر بشر کے نصیب میں نہیں ہو سکتا۔ گویا اس کے زیادہ عزیز ہونے کا ایک باعث ہے۔ زمانہ قدیم سے یہ جواہر مشہور چلا آرہا ہے۔
ٓآج کل کے جوہری اس کی قسمیں بیان کرتے ہیں۔(۱) گلابی (گلاب جیسا سرخ) (۲) بناسپتی (سبز رنگ) ، (۳) نیل بحبر نیلگوں ، (۴)بسنت (زرد رنگ) ، (۵) گڑچ (نہایت کڑا جس پر داغ ہوں چنن چال یا ابرق کہتے ہیں۔ (۶) کٹھی (سفید) ، (۷) بھورا (خاکی رنگ) ، (۸) پیلا (زرد) ، (۹) کالا ( سیاہ رنگ)، (۱۰)کف ، پنجابی جوہری الماس کی صرف چار قسمیں بتا تے ہیں ۔ (۱) شر بتی ( ہلکا سرخ) ، (۲) نیلا ،(۳) سفید ، (۴) سیاہ ۔ ہندو عیب دار اور سیاہ ہیرا کو پہننا زبون اور نحسن سمجھتے ہیں۔ عرب اور فارس کے حکما ء اس کی قسمیں بیان کرتے ہیں۔
(۱)نو شادری ۔ نو شادر کی طرح رنگدار ، (۲) کیر اسے ، نقری رنگ ، (۳) کدونی سفید (۴) حدیدی ، آ ہنی رنگ ، یونانی حکیم الماس کو دوائی بھی استعمال کرتے ہیں۔ اور اس کے اقسام ذیل بیان کرتے ہیں ۔ (۱) شفاف ، فر عونی ،(۲) زرد تبنے ،(۳) بلوی ، آسمانی ، (۴) سبزی ، زبر جدی ، اہل یورپ کم قدر الماس کی تین قسمیں بیان کرتے ہیں۔بورٹ ۔ کاربونیڈ وار بورن ان تینوں کا بیان آگے لکھا جائے گا

خواص و ماہیت

المااس کی ہےئت ذاتی حٓلت آغاز میں جب کہ یہ کان سے نکلتا ہے عموماٌ ہشت پہلو اور مشتبہ معین دو ازدہ اضلاع ہوتے ہیں۔ اسی لئے اسے ازقم قسم ٹیسیرل بیان کرتے ہیں۔اس کی ذاتی شکل میں خصوصیت یہ ہے کہ اس کے ہر ایک ضلع کے اوپر کی سطح ذرا خم دار یا قبہ دار ہوتی ہے۔ در حالیکہ دیگر قلموں کی بناوٹ کے پتھروں کی سطح اکثر ہموار ہوتی ہے۔ اس کی پہلو کے متوازی ایک قدرتی چگاف ہوتا ہے جس کے عیب دار حصہ کو نکالنے میں بڑی آسانی ہوتی ہے
الماس کی اکثر ذاتی شکل قائم رکھی نہیں جا تی بلکہ اسے کاٹ کر حسب ضرورت کئی شکلوں کا بنا لیتے ہیں اسے بریلینٹ روز یعنی گلابی اور ٹیل کاٹ کا بھی اکثر الماس کاٹا جاتا ہے۔چونکہ الماس میں اعلیٰ درجہ کی سختی ہوتی ہے۔اس لئے اس پر عمدہ جلا آسکتا ہے۔ اس خواص سختی کے باعث ہے بڑے بڑے قدیم زمانہ کے الماس ہمیں نصیب ہوئے اگر اس میں اتنی سختی نہ ہوتی تو وہ کوہ نور مغل اعظم وغیرہ ہزار ہا صدیوں کے ہیراہم نہ دیکھ سکتے

یا قوت

اس معروف : یا قوت ، دارسی : یا قوت ، عربی : یا قوتے ۔ ہندی ، مانک
ماہیت : معدنی چیز ہے کہ اپنے معدن میں گندھک اور خالص پارے سے بنتا ہے۔
طبیعت : حرارت اور بر ددت میں معتدل اور دوم میں خشک ہے۔
رنگ وبو: نہایت سرخ شفاف چمکدار ۔
ذائقہ : پھیکا کوئی ذائقہ غالب نہیں۔ مضر : بہت مضر نہیں ہے۔
مصلح : عنبر اور سونا وغیرہ۔
بدل : اس کی دوسری قسمیں مثل سفید کے
نسبت سیارہ: منسوب ہے مریخ سے۔
نفع خاص : مفرح مقوی دل و حرارت غریزی ۔ کامل : تین رتی تک مستعمل ہے۔ناقص: ایک یا دو رتی۔
؂افعال و خواص : مفرح ہے اور دماغ کو قوت دیتا ہے ایک درہم پلانامر گی وسواس خفقان اور طاعون کو مفید اور خون منجمند کو محلل اور نزف الدم کا مانع اور زہروں کا داغ ہوائے وبائی کے تغیر کو سو مند خون کو صاف کرتا اور حرارت غر یزی کا محافظ ہے اور اس کی انگوٹھی پہننا طاعون کو مفید اور منہ میں رکھنا پیاس کا مسکن دل کا تقوی و مفرح اور سرمہ اس کا مقوی بصر محافظ چشم ہے۔
یا قوت جسے انگریزی میں روبی اور ہندی میں مانک کہتے ہیں۔بڑا بیش قیمت جواہر ہے۔ یہ ندرت رنگت اور خوش و ضعی کے باعث سب جواہرات سے افضل گنا جاتا ہے اور نہایت ہی قبول نظر ہے۔ یہ جواہر اپنی ندرت اور خوش رنگی کے باعث نہایت ہے بے بہا ہے۔ زمانہ قدیم سے یہ عجیب جواہر نامزد عالم چلا آرہا ہے ۔کئی عالموں نے اس کی بابت طرح طرح کے بیان لکھے ہیں۔شاعر لوگ اسے استعارتاٌ اپنے شعروں میں استعمال کرتے ہیں اور خاص کر لب معشوق کو اس سے تشبہیہ دیتے ہیں۔چنانچہ ایک شاعر لکھتا ہے۔
لب لعل تو یا قوت است یا قوت است مرجان را
خم زلف تو بادام است یا دام است انسان را
بعض لوگ اس کی نسبت خیال کرتے ہیں کہ رات کہ بھی دن سا خشاں ہے اور اس لئے اس شب چراغ کہتے ہیں۔زمانہ قدیم میں آج کل سے بھی اس کی زیادہ قدر ہے

خواص و ماہیت

(۱) یا قوت ایک عمدہ خوش شکل جواہر ہے۔حالت آغاز میں اس کی معدنی شکل اور متوازی الاضلاع ہوتی ہے۔ اور اس کا ہر ایک گوشہ عموماٌ نو کیلا ہوتا ہے۔اسے بعدہ کاٹ کر حسب ضرورت اور شکل کا بنا دیتے ہیں۔
(۲)الماس سے زیادہ یہ جواہر کسی اور جواہر سے سختی میں کم نہیں ۔ اس واسطے یہ صرف الماس سے کاٹا جاسکتا ہے۔ نیلم ، زمرد ،پکھراج ، بھیکہم کو کاٹ سکتا ہے۔ اس کی سختی نو درجہ ہوتی ہے۔
(۳)چمک اس جواہر کی بلورین ہے۔ متقد مین کو اس کی چمک کا یہاں خیال تھا اور بیان کرتے ہیں کہ یہ جواہر اندھیری رات میں چراغ کا کام دیتا ہے۔
(۴)یہ جواہر عمدہ خوش رنگ ہوتا ہے۔ اس کا رنگ قرمزی ، کبوتر کے خون سا سرخ اور ارغوانی رنگ مائل ہوتا ہے۔اہل عرب ااس کی اور کئی قسمیں بیان کرتے ہیں۔مثلاٌ زردہ ، کبود ، سبز اور سفید اور ہر ایک رنگ کی مختلف قسمیں بیان کرتے ہیں۔ ان سب سے ارمانی یعنی انار کا رنگ عمدہ سمجھا گیا ہے۔ سرخ رنگ یا قوت کی قسمیں بتلاتے ہیں۔ (۱) سرخ حمری ( یعنی بڑا سرخ) (۲) سرخ اوری (گلابی ) (۳) سرخ نارنجی ( ۴) سرخ زعفرانی (۵) سرخ نیموی (یعنی پختہ لیموں رنگ) کبودرنگ کی یہ اقسام بیان کرتے ہیں۔
(۱) کبود آسمان گون (یعنی آسمانی رنگ) ، (۲) کبود کو ہلے ( یعنی سرمہ رنگ)، (۳) کبود لا جوردی ( لا جوردرنگ) ، (۴) کبود پستائی ( پستہ رنگ) ، (۵)یا قوت شفاف ہوتا ہے ، (۶) اس کا وذن مخصوص ۶ ء۴ سے ۸ء۴ درجہ تک ہوتا ہے اور بعض ۹۹ ء ۳ سے ۲ ء ۴ درجہ تک بیان کرتے ہیں ، (۷) اس میں طاقت انعکاس دو چند ہے لیکن تھوڑے درجہ کی ، (۸) ملنے سے اس میں طاقت برقی پیدا ہوتی ہے اور چند گھنٹوں تک رہتی ہے ، (۹) اس میں ۵ ء ۹۸ حصہ آکسڈ آف آئرن اور ۵ حصہ چونا مرکب ہیں ،(۱۰) بعض کی رائے ہے کہ سرخ رنگ یا قوت کو گرمی دی جائے تو اس کی چمک بڑھتی ہے ۔ اور سرخی مائل سفید رنگ یا قوت کو گرمی پہنچانے سے سرخ ہو جاتا ہے۔ در حقیقت دھواں ، پسینہ ، روغن اور بد بو یا قوت کے رنگ پر اثر کرتے ہیں ۔ یعنی اس کے رنگ کو ہلکا خراب کر دیتے ہیں ۔ لیکن گرمی پہنچانے سے یا قوت کا رنگ تیز ہو جاتا ہے ۔ تجربہ سے ثابت نہیں ہوتا ۔ بقول حکماء یونان یا قوت میں یبوست درجہ دوئم کی ہے اور زرد اقسام میں برووت اور یبوست درجہ دوئم ہے

نیلم

اس معروف نیلم ۔ فارسی نیلم۔ عربی ۔ یا قعت کبود ۔ ہندی : نیلمن۔
ماہیت : مشہور پتھر ہے معدنی اعلیٰ قسم کا جس کے نگینے وغیرہ بنائے جاتے ہیں۔
طبیعت پہلے درجے میں گرم اور تیسرے میں خشک ہے۔
رنگ و بو نیلا صاف شفاف چمکدار ۔ ذائقہ پھیکا کوئی غالب نہیں ۔
مضر : گرم مزاجوں کو مضر ہے ۔ مصلح : یا قوت سفید اور اشیا ئے سرد ۔
بدل : یا قوت سرخ یا زرد ۔ نسبت سیارہ : منسوب ہے زحل سے۔
نفع خاص : مفرح و مقوی دل و دماغ ۔ کامل : ساڑھے تین رتی تک۔
نا قص : رتی سے دور تی تک۔
افعال و خواص : مفرح ہے اور دل و دماغ کو قوت اور ایک ورم حل کر کے پلانا صرع اور وسواس اس ، خفقان ، طاعون ، نزف الدم ، دفع زہر ۔ تغیرہوائے بائی میں مفید ،خون کو صاف کرتا ہ۔حرارت غریزی اور قو ائے حیوانی کا محافظ ہے اس کا منہ میں رکھنا منہ کی بد بو کا دافع تشنگی کا مسکن ۔ مقوی دل و مفرح ہے ، سرمہ اس کا مقوی بصر اور محافظ چشم ہے۔نیلم جسے سنسکرت میں نیلا ، انگریزی میں سیفائر اور فارسی عربی میں یا قوت ارزق کہتے ہیں نہایت ہی وعمدہ نیلگوں جواہر ہے ۔ اس کی چمک دمک اور آسمانی نیلی رنگت دل کو بہت بھاتی ہے۔ یہ جواہر زمانہ قدیم سے مشہور چلا آرہا ہے اور اہل ہنو د اور اہل اسلام کی پرانی کتابوں میں اس کا ذکر آیا ہے ۔ اس جواہر کے برابر کسی ایک معبود کا نام کی نظر کرتے تھے۔ جواہر اپنی خوش رنگت اور چمک چمک کے باعث زیبائش بدنی کے لئے بہت مروج ہے۔ متقد مین چونکہ ایسے جواہر کو کاٹنا بڑا مشکل سمجھتے تھے اس لئے یہ زیورات میں کم مستعمل تھا ۔ نیلم کے پانچ اقسام بیان کئے جاتے ہیں اور اس کے پہننے کے مختلف فوائد لکھے ہیں۔
(۱) گوڈ تو ، جو مقدار میں چھوٹا اور تول میں بھاری ہو اس کے پہننے سے دل کی مرادیں بر آتی ہیں۔
(۲)سنگرت جو ہمیشہ چمکتار ہے اس کی پہننے سے دولت اور محبت بڑھتی ہے۔
(۳) ور ناڑی جسے سورج کے سامنے رکھنے سے نیلے رنگ کی کرنیں نکلیں اس کے پہننے سے مال اور اجناس حاصل ہوتے ہیں۔
(۴)پارشورت ، جس سے سنہری روپہری اور بلوی چمکیں نکلیں اس کے پہننے سے نا موری ہوتی ہے۔
(۵) رنج کیتو ، جس کو برتن میں رکھنے سے اس کی چمک کے باعث برتن نیلا دکھلائی دے، اس کے پہننے سے اولاد کو ترقی ہوتی ہے۔ ایک مہانیل نامی نیلم ہوتا ہے۔ جسے اگر اس سے سو حصہ زیادہ دودھ میں ڈال دیں تو اس کی چمک سے دودھ نیلے رنگ کا دکھلائی دیتا ہے۔ ایک اندر نیل نامی نیلم ہوتا ہے ۔ ان کے علاوہ ضرر اور نقصان متصور ہوتے ہیں وہ چھ ہیں ۔
(۱) ابرق جس کے اوپر کے حصہ میں بادل کی سی چمک ہو اس سے عمر و دولت برباد ہوتی ہے۔
(۲)تراش جس میں ٹوٹے پن کا نشان ہو ۔ اس سے ریچھ وغیرہ جانوروں سے ضرور پہنچنے کا اندیشہ ہوتا ہے۔
(۳)چترک جو مندرجہ بالا رنگوں سے کسی مختلف رنگ کی ہو اس کے پہننے سے قوم کے بر بادی متصور ہے۔
(۴) مرت گر یہہ جس کا مٹیلا سا رنگ ہو اس سے کئی امراض پیدا ہوتے ہیں۔
(۵) اشم گر یہہ جس میں پتھر کا سا ٹکڑا معلوم ہو۔ اس کے پہننے سے موت کا ڈر ہوتا ہے۔
(۶) روکہی جس میں پتھر چینی کی طرح داغ ہوں اس کے پہننے سے جلا وطنی کا ڈر ہے۔ آج کل کے جواہر نیلم کی دو قسمیں بیان کرتے ہیں۔ اول پرانا ، دوم نیا ہر ایک تین نوعیں بتلاتے ہیں۔
(۱) سبز ین نیلا یا نیلا مائل سبزی ۔ (۲)لال پن نیلا ، (۳) خوب نیلا یعنی گہرا نیلگوں ، اہل فارس نیلم کو قوت کی ایک قسم بیان کرتے ہیں اور اس لئے یا قوت ارزق کہتے ہیں لیکن فی الحقیقت یہ یا قوت سے ایک علیحدہ جواہر ہے

خواص و ماہیت

نیلم لی معدنی شکل شش پہلو متوازی الا ضلاع یا مسدس ہوتی ہے۔ اس لئے یہ زمرہ ڈ چروک میں گنا جاتا ہے۔اس میں سختی ۹ درجہ ہے۔ اس لئے یہ صرف الماس سے ہی کاٹا جا سکتا ہے۔ نیلم کا رنگ بہت عمدہ خوشنما ہوتا ہے یعنی روشن نیلگوں سے ارغوانی نیلے رنگ کا ہوتا ہے۔ سفید اور ارغوانی رنگ کے نیلم بھی ہوتے ہیں ۔ کتب اہل ہنود میں ان کے علاوہ نیلم کئی اور انواع بیان کئے گئے ہیں۔ چنانچہ لکھا ہے کہ ’’ اگر چہ اصلی نیلم کا رنگ نیلا ہے جس کے باعث یہ نیلم کہلاتا ہے پھر بھی کئی ایک رنگوں کی جھلک ان میں ظاہر ہوتی ہے۔چنانچہ بعض نیلم کنول کے پھول کی طرح بعض تلوار ، بھونرے ، سمندر کے پانی ، کوئل کے گلے عغیرہ کی ماند نیلے رنگ کے ہوتے ہیں۔ ان کے رنگوں کے لحاظ پر چار نو عیں ہیں۔ (۱) برہمن نیلم ( سفیدی مائل نیلا) ، (۲) چھتری ( سرخی مائل نیلا) ،(۳) ویش ( زرسی مائل نیلا ) ، (۴) شودر ( سیاہی مائل نیلا)۔
نیلم کا وزن مخصوص ۹ ء ۳ سے ۲ ء ۳تک ہے۔ نیلم کے مرکبات کیمیائی طاقت انعکاس وغیرہ دیگر خواص یا قوت سے ملتے ہیں۔ نیلم اور یا و قوت میں صرف رنگ کا ہی فرق ہے۔ یعنی نیلم کا رنگ آسمانی نیلگوں اور یا قوت کا رنگ سرخ ہوتا ہے۔ نیلم کا رنگ مادہ کروپ ( ایک مشہور عنصر) کی ترکیب کے باعث ہوتا ہے۔ گرمی کے تاب سے سفید اور زردی مائل نیلم سفید ہو جاتے ہیں لیکن مشرقی نیلم کا رنگ گیس کی روشنی کے آگے ایسا ہی رہتا ہے۔ ہاں کم درجہ عدووں کا رنگ امنہٹ کے رنگ کی طرح تاریک ہو جاتا ہے۔

حمل افراد کی دیگر بر جوں سے تعلق رکھنے والے افراد سے شادیاں

حمل مرد اور حمل عورت

حمل مرد ، حمل عورتوں کے ساتھ اچھی زندگی گزارتے ہیں ، ان کے درمیان اچھی ہم آہنگی ہوتی ہے ۔ یہ ایک دوسرے کے جذبات کا خیال رکھتے ہیں ۔ عورت کو اس بات کا پورا پورا خیال ہوتا ہے کہ جب اس کا شوہر دن بھر کام کاج کر کے آئے تو اسے ایک اچھا اور پر سکون ماحول درکار ہو ۔ اس لئے یہ عورت گھر صاف ستھرا رکھتی ہے ۔ اور جب شوہر گھر آتا ہے تو اس سے بڑی خوش اخلاقی اور محبت سے ملتی ہے ، یوں شوہر کو ایسا محسوس ہوتا ہے جیسے اس کی دن بھر کی تھکان اتر گئی ہو۔
یہ جوڑا اپنے معاملات میں دوسروں کو دخل اندازی کی اجازت نہیں دیتا ۔ اگر کوئی دخل اندازی کی کوشش کرے تو یہ اس سے بڑی سختی سے نمٹتے ہیں۔
* یہ ایک دوسرے کے اچھے رفیق ہوتے ہیں۔
* ایک دوسرے کے جذبات کو ٹھیس نہیں پہنچاتے۔
* گھر کو جنت بنا دینے کی خواہش رکھتے ہیں۔
؂ * بچوں پر خصوصی توجہ رکھتے ہیں۔
* اپنے گھر کی خوشحالی کے لئے کو شش کرتے رہتے ہیں

حمل مرد اور ثور عورت

حمل مرد اور ثور عورت کے درمیان مجموعی طور ہر ہم آہنگی رہتی ہے لیکن بعض مراحل پر ان میں اختلافات بھی پیدا ہو جاتے ہیں ۔ حمل مرد میں چونکہ تیزی ہے اس لئے یہ مرد ہمیشہ ہر کام تیز رفتاری سے کرنے کے خواہش مند ہوتے ہیں ۔ ان کی بیوی ان کی تیز رفتاری میں اکثر ان کا ساتھ نہیں دے پاتی ، وہ اپنی فطرت کے مطابق بہت سوچ سمجھ کر چلنا چاہتی ہے جبکہ مرد کی خواہش ہوتی ہے کہ کام فوراٌ ہو جائے اس طرح دونوں میں اختلاف رائے پیدا ہو جاتا ہے۔ ، اس کے علاوہ بھی ان میں اکثر کھٹ پھٹ چلتی رہتی ہے لیکن یہ بات کو زیادہ بڑھنے نہیں دیتے ۔ بہت کم ایسا ہوتا ہے کہ ان کے اختلاف بہت زیادہ بڑھ جائیں ۔ اکثر یہ معالات کو تھوڑی سی گرما گرمی کے بعد سنبھال لیتے ہیں۔ دراصل یہ دونوں اپنے گھرانے سے مخلص اور محبت کرنے والے ہوتے ہیں اس لئے ایسے مسائل پیدا نہیں ہونے دیتے جو ان کے لئے مصیبت کا با عث اور جن کا اثر ان کے گھر کی خوشحالی اور سا لمیت پر پڑے۔

*اکثر یہ ایک دوسرے کا مزاج سمجھ جائیں تو اچھی زندگی گزارتے ہیں ۔
* ثور عورت سچی محبت کی خواہش مند ہوتی ہے۔ گھر کی سا لمیت کے لئے مرد کو اس بات کا خیال رکھنا ہے۔
* یہ جوڑا خوشحال اور کامیاب رہتا ہے۔
* یہ لوگ بچوں پہ خاص توجہ دیتے ہیں

حمل مرد اور جوزا عورت

حمل مرد کے لئے جوزا بیوی بڑی اچھی ثابت ہوتی ہے ۔لیکن کبھی کبھار مرد اس کی طرف سے مختلف پر یشانیوں کا شکار ہو جاتا ہے۔ جوزا خواتین بھی چونکہ تیز رفتاری پر یقین رکھتی ہیں اس لئے حمل مردوں کے ساتھ ساتھ چلتی ہیں لیکن ان کے تیز رفتاری اکثر مردوں سے بھی زیادہ ہے جاتی ہے اس لئے یہ مرد جو کہ خود کو بہت تیز رفتار سمجھتے ہیں ۔ پریشانی کا شکار ہو جاتے ہیں۔یوں سمجھ لیں کہ جیسے ایک ڈرائیور اپنی گاڑی ڈرائیو کرتے ہوئے یہ سوچ رہا ہو کہ وہ بہت تیز رفتاری کا مظاہرہ کر رہا ہے لیکن اچانک کوئی گاڑی عقب سے آکر اس سے آگے نکل جائے تو اس ڈرائیور کی جو حالت ہوتی ہے، ویسی ہی حالت ایسے اوقات میں ان شوہروں کی بھی ہوتی ہے۔ جب ان کی جوازا بیویاں ان سے آگے نکل جاتی ہیں ۔ بہر حال یہ ایک کامیاب جوڑا ہوتا ہے ۔ اکثر شوہروں کو جوزا بیویوں کی طرف سے بد مزہ کھانے کھانے پڑتے ہیں ہیں ، کیونکہ جوزا خواتین کی ایک خامی یہ ہے کہ یہ اچھے کھانے نہیں بنا سکتیں۔ یہ بھر پور توجہ اور محنت کے باوجود اپنی اس خامی پر قابو نہیں پا سکتیں۔
یہ لوگ اکثر دوسروں کی باتوں میں آجاتے ہیں۔
لوگ ان کو بہکا کر مختلف فوائد حاصل کر لیتے ہیں ۔
یہ بہت جلد اپنے تمام مسائل پا قابو پا لیتے ہیں۔
کبھی کبھی ان کو توجہ بچوں پر کم ہو جاتی ہے۔

حمل مرد اور سرطان عورت

یہ جوڑا درمیانی زندگی گزارتا ہے ۔ ان میں اکثر اختلافات پیدا ہوتے رہتے ہیں ۔ ان کے مزاج آپس میں زیادہ نہیں ملتے اس لئے تکرار کا اندیشہ ہر وقت رہتا ہے ۔ سر طان بیوی حمل مرد کے مزاج اور اس کے خیالات کا زیادہ خیال نہیں کرتی ۔ اس کی خواہش ہوتی ہے کہ اس کا شوہر اس کے سامنے بیٹھا اس سے پیار محبت کی باتیں کرتا رہے۔ وہ شوہر پر بے وجہ بھی شک کرتی ہے اور اس وجہ سے شدید پر یشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ یہ بیوی اس شک کی وجہ سے شوہر کی دفتر بھی پہنچ سکتی ہے اور وہاں لوگوں سے شوہر کے بارے میں باز پرس کرے گی ۔ اسے اس بات کی پروا نہیں ہوتی کہ اس کا شوہر اس کی ان حرکتوں کی وجہ سے کتنا پریشان اور بے عزت ہو رہا ہے ۔ ا یسے شہروں کو بہت محتاط طریقے سے چلنے کی ضرورت ہوتی ہے۔
یہ بیوی اپنے شوہر سے بہت مخلص ہوتی ہے اور اس سے بے وفائی کے بارے میں سوچ بھی نہیں سکتی ۔ اگر اسے اپنے شوہر پر پورا اعتبار ہو تو یہ اس کی خاطر بڑی سے بڑی قربانی دینے سے بھی دریغ نہیں کرتی اور اگر شوہر بے وفائی کا مرتکب ہو تو اس کی دشمن بن جاتی ہیں
اگر شوہر معافی مانگ لے تو اسے کھلے دل سے معاف کر دیتی ہیں۔
یہ جوڑا اگر ایک دوسرے کو سمجھ لے تو اچھی زندگی گزار سکتا ہے۔
انہیں کو شش کرنی چاہے کہ ایک دوسرے کے جذبات کا خیال رکھیں۔
بات بڑھنے کی صورت میں نو بت علیحدگی تک آسکتی ہے اس لئے کو شش کریں کہ بات نہ بڑھائیں ورنہ بچے خوار ہو سکتے ہیں

حمل مرد اور اسد عورت

اسد خواتین کے ساتھ زندگی بسر کرنا کسی کے بس کی بات نہیں ، خاص طور پر حمل یا حوت مردوں کے لئے تو بڑا ہی کٹھن سفر ہوتا ہے۔ اسد عورت بڑی خوب صورت اور دلکش ہوتی ہے جو ہر کسی کی نگاہ کو اپنے اوپر مرکوز کر لیتی ہے اور مردوں کو اس کی خوب حفاظت کرنی پڑتی ہے۔ ساتھ ہی حمل مرد کے لئے یہ بڑی مشکل ہوتی ہے کہ اس کی اسد بیوی بڑی بے باک ہوتی ہے اور ہر کسی سے گھل مل کر بات چیت کر لیتی ہے اور بے چارا شوہر بے شمار وسوسوں اور اندیشوں کا شکار ہو جاتا ہے حانکہ اس کی بیوی کسی غلط نیت سے کسی سے بات چیت نہیں کرتی اس کے باوجود مرد کا پریشان ہو جانا فطری عمل ہے۔اسد خواتین اکثر بات بے بات جھگڑتی ہیں اور شوہروں پر بھی شک بھی کرتی ہیں۔حمل شوہر ایسی باتوں کو سخت نا پسند کرتا ہے اس لئے تلخ کلامی اور جھگڑے ہوتے رہتے ہیں۔ حمل مرد کی خواہش ہوتی ہے کہ ان کے معاملات میں کوئی اور نہ بولے لیکن اسد بیوی اپنے معاملات میں دوسروں کہ بھی شامل کر لیتی ہے۔
اسد بیوی اگر گھر کو سنبھالنے کی کوشش نہ کرے تو معاملات بگڑ سکتے ہیں ۔
اس جوڑے کو ایک دوسرے کو سمجھنے کو کوشش کرنی چاہئے

حمل مرد اور سنبلہ عورت

سنبلہ خواتین بڑی گہری ہوتی ہیں ۔ ان کے من کی گہرائی کو جان لینا بڑا مشکل کام ہوتا ہے ۔ ان کے شوہروں کو اکثر اس وقت مایوسی کا سامنا کرنا پڑتا ہے جب وہ سمجھ رہے ہوتے ہیں کہ وہ اپنی سنبلہ بیوی کو مکمل طور ہر سمجھ چکے ہیں اور کوئی ایسی بات سامنے آجاتی ہے جو ان کے لئے نئی ہوتی ہے اور یہ ان کی بیوی کے فطرت کا ایک نیا رخ ہوتا ہے۔
سنبلہ بیوی اپنے شوہر سے بڑی وفادار ہوتی ہے۔حمل مرد اکثر اس کے شک کا نشانہ اس لئے بن جاتا ہے کہ وہ اپنی دھن میں رہتا ہے اور اکثر باتوں کو نظر انداز کر دیتا ہے جبکہ اس کی بیوی بہت باریک بین ہوتی ہے اور ہر بات کا گہری نظروں سے جائزہ لیتی ہے۔ یوں اپنے شوہر کی کئی باتوں پر اسے شک کرنے کا موقع مل جاتا ہے۔ اگر اس طرح کے معاملات نہ ہوں تو ان لوگوں کی زندگی بڑی اچھی گزرتی ہے۔ یہ ایک خوشحال گھرانہ بنانے میں کامیاب رہتے ہیں اور اگر ان میں اعتماد کی فضا قائم ہو تو ان کی زندگی قابل رشک گزرتی ہے۔ ان کے لئے ضروری ہے کہ :
ایک دوسرے کو سمجھنے کی کوشش کریں اور ایک دوسرے کے جذبات کا خیال رکھیں۔
بے وجہ شک و شبہ زندگی کو اجیرن بنا سکتا ہے ، اس سے گریز کریں۔
بچوں کو طرف پوری توجہ رکھیں

حمل مرد اور میزان عورت

یہ ایک کامیاب ترین جوڑا ہوتا ہے۔ اس کامیابی میں حمل مرد کا نہیں بلکہ میزان عورت کا بڑا دخل ہوتا ہے۔ یہ میزان عورت بہت ذہین ، سلیقہ مند ، وفادارر اور محبت کرنے والی ہوتی ہے۔ یہ اپنے شوہر کے لئے خوشیوں کا سامان کرتی رہتی ہے۔ شوہر کی کوئی پریشانی ہو یہ اس کا بھر پور ساتھ دیتی ہے۔ اس کا حوصلہ بڑھاتی ہے۔ یوں شوہر میں ایک نیا خوصلہ اور ولولہ پیدا کرنے کا باعث بنتی ہے۔
حمل مرد اکثر اپنی میزان بیوی کی طرف سے پریشان رہتا ہے اس کی وجہ اس کا بے پایاں حسن ہے۔ عورت ایسا طلسماتی حسن رکھتی ہے کہ لوگ اس میں کشش محسوس کرتے ہیں۔ یہ اکثر دوسروں سے گھل مل کر بات کر لیتی ہے جس کی وجہ سے شوہر پریشان ہو جاتا ہے ، ایسے حالات میں شوہر کو پریشان ہونے کی قطعات ضرورت نہیں کیونکہ اس کی بیوی اس کی وفادار ہے اور رہے گی۔ اس کے دل میں کسی اور کا خیال تک نہیں آسکتا۔
یہ اپنے شوہر ، اپنے بچوں اور اپنے گھر کا بہت خیال رکھتی ہے۔ اسے اپنا گھرانہ بے حد عزیز ہوتا ہے جس کے لئے یہ بڑی سے بڑی قربانی دے سکتی ہے۔
شوہر کا چاہئے کہ وہ اپنی میزان بیوی کا بہت خیال رکھے۔
شوہر کو گھر کی طرف پوری توجہ دینی چاہئے۔
اس جوڑے کو چاہئے کہ شک کا ماحول پیدا نہ ہونے دے۔
تلخ کلامی اور جھگڑوں سے گریز کیا جائے۔

حمل مرد اور عقرب عورت

اس جوڑے کی زندگی میں اکثر تلخی رہتی ہے۔ اس کہ وجہ عقرب عورت کا مزاج ہے جو ذرا سی بات پر شدید غصے میں آجاتی ہے۔ یہ شوہر پر شک کرتی ہے اور یہ شک اکثر بے وجہ ہوتا ہے جو شوہر کے لئے ذہنی اذیت کا سبب بنتا ہے ، ایسے میں تلخی ہونا تو فطری امر ہے۔ اگر شوہر ذرا گرما گرمی کا مظاہرہ کرے تو بات بگڑتی چلی جاتی ہے اور شدید نوعیت کے جھگڑے وقوع پذتر ہوتے ہیں۔
جس وقت عقرب بیوی غصے میں ہو تو ایسے میں شوہر کے لئے بہتر ہے کہ خاموشی اور مصلحت سے کام لے کے معا ملے کو رفع دفع کرنے کی کوشش کرے کیونکہ ایسے وقت میں اس کی بیوی اس کی ایک نہیں سنے گی اور اگر شوہر نے بحث مباحثے کی کوشش کی تو یہ عورت بات بگاڑنے میں دیر نہیں لگائے گی۔
ان لوگوں کے جھگڑوں کی وجہ سے ان کے بچے ذہنی دباؤ کا شکار رہتے ہیں ۔ اس گھرانے کو سنبھالنے کی اصل ذمہ داری مرد کے کاندھوں پر ہوتی ہے ، عقرب عورت تو بات بات پر گھر بگاڑنے پر تیار ہو جاتی ہے۔
اس جوڑے کو چاہئے کہ:
آپس میں ہم آہنگی پیدا کرے۔
تلخی اور جھگڑوں کو طول نہ پکڑنے دے۔
اپنے گھرانے کو قائم رکھنے کے لئے صبر اور ضبط سے کام لے

حمل مرد اور قوس عورت

یہ جوڑا مجموعی طور پر اچھی اور قابل رشک زندگی گزارتا ہے۔ اس گھرانے کی خوشحالی میں قوس عورت کا بڑا دخل ہوتا ہے۔ قوس عورت چونکہ بڑی ذہین اور سلیقہ مند ہوتی ہے اس لئے گھر کے تقریباٌ تمام ہی امور بڑی خوش اسلوبی سے خود ہی نمٹا لیتی ہے۔ یہ اپنے شوہر کو زیادہ سے زیادہ آرام دینا چاہتی ہے۔ اگر شوہر کام سے آئے تو اس کی خدمت بھی کرتی ہے اور اچھی و خوش گوار باتیں کر کے اسے خوش کرتی ہے۔ اس کے کھانے پینے ، کپڑوں اور دیگر ضروریات کا پورا خیال رکھتی ہے۔
یہ عورت اپنے شوہر پر پورا بھروسہ کرتی ہے۔ اگر شوہر دیر سے گھر آئے یا کئی دن کے لئے گھر سے چلا جائے تو یہ اس پر شک نہیں کرتی۔ اگر اس کے دل میں شک آئے تب بھی یہ اس کا گلا گھونٹ دیتی ہے۔ اس کی سلامتی اور خوش حالی کے لئے یہ بڑی سے بڑی قربانی دے سکتی ہے۔ اگر کبھی شوہر بے وفائی کا مرتکب ہو بھی جائے تو یہ ایسی صورت حال بنا دیتی ہے کہ اس کا گھرانہ بگڑتا نہیں ہے۔ یہ شوہر سے ناراض ہو سکتی ہے لیکن گھر کو بگاڑنا پسند نہیں کرتی۔ شوہر اگر جھوٹ موٹ بھی معافی مانگ لے تو اسے فوراٌ معاف کر دیتی ہے۔ یہ بچوں کا بہت خیال رکھتی ہے۔
یہ ایک کامیاب گھرانہ ہے۔
انہیں چاہئے کہ دوسروں کو اپنے معاملے میں نہ بولنے دیں۔
شوہر اپنی بیوی کے جذبات کا خیال رکھے

حمل مرد اور جدی عورت

اسے بھی ایک کامیاب جوڑا کہا جا سکتا ہے۔ اس کی کامیابی کا انحصار اس بات پر ہے کہ مرد گھر پر کتنی توجہ دیتا ہے۔ اگر مرد کی مناسب توجہ گھر پر ہے تو پھر یہ ایک قابل رشک گھرانہ بن سکتا ہے۔ جدی عورت پیار محبت اور توجہ چاہتی ہے۔ یہ اپنے شوہر پر بڑی گہری نظر رکھتی ہے۔ شوہر سے اگر کوئی غلطی سرز ہو جائے تو یہ سر زنش کئے نہیں رہ سکتی ۔ ایسے میں اگر مرد صبر اور حوصلے سے کام لے تو بہتر رہتا ہے ورنہ تلخی ہو جانے میں دیر نہیں لگتی۔
اگر مرد مالی امور کی طرف توجہ نہ دے اور ترقی کرنے کی خواہش کو ترک کر دے تو بیوی بڑی بددل ہوتی ہے۔ وہ اپنے شوہر کو ترقی کرتے دیکھنا چاہتی ہے۔ ناکام اور ناکارہ لوگ اس نا پسند ہوتے ہیں۔ اگر مرد کی توجہ گھر کی جانب ہو اور وہ کامیابی کے معاونت بھی کرتی ہے۔ اسے اچھے مشوروں سے بھی نوازتی ہے اور اس کا پورا پورا خیال بھی رکھتی ہے ۔ بچوں کے ساتھ اس کا رویہ درمیانہ ہوتا ہے۔ اس جوڑے کو چاہئے کہ :
*ایک دوسرے کے جذبات کا خیال رکھیں۔
*بیوی اپنے شوہر کو کسی صورت نظر انازنہ کرے۔
* دونوں بچوں پر خاص توجہ دیں۔

حمل مرد اور دلو عورت

یہ جوڑا درمیانی زندگی گزارتا ہے اور اس میں اکثر تلخی و ترشی کے امکانات موجود رہتے ہیں ۔ اس کی وجہ یہ ہوتی ہے کہ ان کے مزاج خاصی حد تک ایک دوسرے سے مختلف ہوتے ہیں ۔ بیوی بڑی روشن خیال ہوتی ہے جس کی وجہ سے اکثر شوہر شک و شبہ میں گرفتار ہو جاتا ہے۔ یہ عورت بے وفا نہیں ہوتی لیکن بڑی بے باک ہوتی ہے۔ یہ دوسرے مردوں سے گھل مل کر بات کر لیتی ہے جو حمل مرد کے لئے نا قابل برداشت ہے۔
دلو عورت فطری طور پر آزادی پسند ہے اور ساری زندگی آزادی ہی گزارنا چاہتی ہے ۔ اس کی خواہش ہوتی ہے کہ اس پر حکم نہ چلایا جائے ، روک ٹوک نہ کی جائے اور اس کے معاملات میں مداخلت نہ کی جائے ۔ شادی سے پہلے تو گھر والے اسے کسی نہ کسی طرح برداشت کر لیتے ہیں لیکن شادی کے بعد اس کے حمل شوہر کے لئے ایسی باتیں برداشت کرنا مشکل ہوتا ہے۔ ایسے میں اس گھرانے کو بچانے کی اصل ذمہ داری مرد کے کاندھوں پر آجاتی ہے ۔ اگر وہ سمجھ کر نہ چلے تو اس کے گھر بگڑ جانے کے امکانات خاصے روسن ہوتے ہیں۔
*دلو عورت اپنے بچوں پر درمیانی توجہ رکھتی ہے۔
*بیوی گھرانے اور اہمیت دے۔
* گھر کی سلامتی کے لئے کوئی معاہدہ کر لیا جائے تو بہتر ہے۔
* بچوں کو بہت اہمیت دیں۔

حمل مرد اور حوت عورت

یہ بڑا قابل رشک جوڑا ہوتا ہے ۔ ویسے تو حوت عورت جس کے نصیب میں بھی آجائے وہ شخص وہ بڑا خوش قسمت ہوتا ہے اسی طرح یہ خوش قسمتی حمل مرد کے حصے میں آجائے تو اس کا گھر بھی جنت کا نمونہ بن سکتا ہے۔ اس میں مرد کا زیادہ عمل دخل نہیں ہوتا بلکہ حوت عورت کا سارا ہاتھ ہوتا ہے۔ یہ عورت بڑی محبت کرنے والی اور سلیقہ مند ہوتی ہے۔ یہ اپنے شوہر کے علاوہ کسی اور کے بارے میں سوچ بھی نہیں سکتی اور اس سے کبھی بے وفائی کی امید نہیں کی جاسکتی۔ یہ اپنے گھر کو سجا سنوار کر رکھتی ہے۔ یہ شوہر کے بیرونی معاملات سے دلچسپی نہیں رکھتی لیکن اس کا مطلب یہ بھی نہیں ہے کہ یہ شوہر کر ترقی کی خواہاں نہیں ہے۔ یہ اپنے شوہر کو ترقی کرتے دیکھنا چاہتی ہے مگر اس سے اس کے کام کے بارے میں زیادہ بات چیت نہیں کرتی ۔ اس کی سب سے بڑی خواہش یہ ہوتی کہ اس کا شوہر اس سے پیار کی باتیں کرے۔
اس کے شوہر کو کبھی یہ شکایت نہیں ہوتی کہ کھانا وقت پر یا ذائقہ دار نہیں ملتا۔ شوہر کو ہر چیز بر وقت ملتی ہے ۔ کیونکہ اس کی بیوی اس طرح کا خیال رکھنا چاہتی ہے، وہ اس سے محبت کرتی ہے اور اس کے لئے ہر قربانی دے سکتی ہے۔ عورت اپنے بچوں پر خصوصی توجہ دیتی ہے۔ اس کے لئے ضروری ہے کہ ۔
* مرد ، عورت کے جذبات کا خیال رکھے۔
* اپنے معاملات میں کسی کو نہ بولنے دیں

حمل عورت اور حمل مرد

ان کی زندگی اکثر بہت اچھی گزرتی ہے اور اکثر ان میں تلخیاں جنم لیتی رہتی ہیں ۔ اچھی زندگی گزرنے کی وجہ ہوتی ہے کہ اگر ان دونوں کی دلچسپیاں ایک ہی ہوں اور ان کا نقطہ نظر ایک ہی ہو تو زندگی کامیابی اور کامرانی کی طرف رواں دواں رہتی ہے لیکن اگر دلچسپیاں مختلف ہوں تو یہ دونوں ایک دوسرے کے لئے مشکلات پیدا کر دیتے ہیں۔ ایسی خاتون اگر امور خانہ داری سنبھالے تو بہتر رہتا ہے لیکن اکثڑ حمل خواتین امور سے زیادہ گھر کے بیرونی معاملات میں دلچسپی رکھتی ہیں جو کہ بگاڑ کا سبب ہوتا ہے۔ ایسے میں اس گھرانے کی سلامتی ایک ہی صورت میں رہ سکتی ہے کہ دونوں فریقین کوئی معاہدہ کر لیں۔ حمل عورت چونکہ تیز رفتار اور ترقی کی خواہاں ہے اس لئے گھر سے باہر کے معاملات میں دلچسپی لیتی ہے مثلاٌ سوشل ورکنگ ، ملازمت یا کاروبار تو اس کی زیادہ توجہ اس جانب ہو جاتی ہے جس کا اثر گھر کے اندرونی معاملات پر پڑتا ہے اور اکثر تلخیاں ہوتی رہتی ہیں۔ ان کے لئے ضروری ہے کہ :
* گھر کی سلامتی کو اہمیت دیں۔
* معاملات کو زیادہ نہ بگڑنے دیں۔
* بچوں کی طرف سے فکر مند رہیں

حمل عورت اور ثور مرد

یہ جوڑا کامیاب ، خوش حال اور قابل رشک زندگی گزارتا ہے ، اس کی وجہ ثور مرد کا مزاج ہے ۔ مرد بہت ذہین اور سوچ سمجھ کر قدم اٹھانے والا ہوتا ہے۔ یہ اندازہ کر لیتا ہے کہ کس کام میں فائدہ ہے اور کس میں نقصان ، یہ اپنے گھریلو معاملات میں بھی دیگر معاملات کی طرح بہت محتاط ہوتا ہے۔ یہ اپنی بیوی کے جذبات و احساسات اور ضروریات کا پورا خیال رکھتا ہے۔
اگر کوئی تلخی ہو جائے تو مرد بڑی ہو شیاری ، ذہانت اور نرم مزاجی سے اسے ختم کرنا جانتا ہے۔ یہ بیوی کی کئی کوتاہیوں کو نظر انداز کر دیتا ہے۔ اکثر خاتون خانہ کو شکایت رہتی ہے کہ اس کا شوہر تیزی سے ترقی نہیں کرنا چاہتا ۔ اس کی وجہ اس عورت کی فطرت ہے ، یہ تیز رفتاری کو پسند کرتی ہے جبکہ شوہر اس کی اس شکایت کو بھی ہنس کر ٹال دیتاہے کیونکہ وہ سست اور دھیمے مزاج کا ہے لیکن اس کا مطلب ہر گز نہیں ہے کہ وہ ترقی کا خواہاں نہیں ہے۔ وہ اپنے حساب سے ترقی کی منزلیں طے کرنا چاہتا ہے ، اسے عجلت پسند نہیں ہے۔
یہ جوڑا بچوں پر خصوصی توجہ دیتا ہے ۔ اس جوڑے کے لئے ضروری ہے کہ:
* ایک دوسرے کے مزاج کو سمجھیں۔
* دوسروں کو اپنے معاملات میں نہ بولنے دیں۔
* خاتون تلخ کلامی سے گریز کریں

حمل عورت اور جوزا مرد

یہ جوڑا اگر ایک دوسرے کو سمجھ کر زندگی کی ڈگر پر گامزن رہے تو خوشحالی ان کا مقدر بنتی ہے ۔ دونوں اگر اپنی اپنی فطرت کے مطابق چلیں تو اکثر مشکلات اور تلخیاں آتی رہتی ہیں ۔ دراصل دونوں کے مزاج میں خاصا فرق ہے ۔ جوزا مرد اکثر خواتین کے دلدادہ ہوتے ہیں اور شادی کے بعد بھی ان کا یہ مزاج بہت کم ہی بدلتا ہے ، ایسے میں اگر بیوی سخت مزاجی کا مظاہرہ کرے تو مشکلات کھڑی ہو جاتی ہیں ۔ یوں بیوی پر گھر کی سلامتی کی زیادہ ذمہ داری آجاتی ہے ۔ اس لئے ضروری ہے کہ وہ شوہر کی غلط حرکتوں کو نظر انداز کرے ، نظر انداز سے مراد یہ نہیں ہے کہ ان حرکتوں کو قبول کرے بلکہ شوہر کو سدھرنے کا موقع دے۔ اسے یہ سمجھائے کہ اس نے اگر اپنی ان حرکتوں کو ترک نہ کیا تو گھر بگڑ بھی سکتا ہے۔ جوزا مرد اتنا بے وقوف اور بے حس نہیں ہے کہ وہ اپنا گھر بگاڑے گا ، اسے اپنے بچوں سے بڑا پیار ہوتا ہے۔
اس گھرانے میں عورت کو زیادہ قربانیاں دینا پڑتی ہیں کیونکہ مرد لا ابالی اور خاصا بے پروا ہوتا ہے ، وہ اکثر نتائج کی پروا نہیں کرتا۔
ان کے لئے ضروری ہے کہ:
مرد گھر کی سلامتی کی اہمیت کو سمجھے۔
*عورت ، مرد کو سدھارنے کی کوشش کرے۔

* دونوں بچوں کو اہمیت دیں

حمل عورت اور سرطان

یہ ایک دوسرے کے لئے خاصا مشکل جوڑا ہوتا ہے۔ مزاج کے اختلاف کی وجہ سے اکثر ان میں بحث و تکرار ہوتی رہتی ہے۔ یہ دونوں اگر ایک دوسرے کے مزاج کو نہ سمجھیں تو ان کے اختلافات بلکہ ذرا ذرا سی باتیں بڑے جھگڑوں کی شکل اختیار کر لیتی ہیں۔
مرد کی خواہش ہوتی ہے کہ سب کچھ اس کی مرضی چلانے کی کوشش کرتے ہیں۔
مرد بہت زیادہ حساس ہوتا ہے ، یہ ذرا ذرا سی بات کو محسوس کرتا ہے جبکہ بیوی اپنی تیز رفتار طبیعت کے باعث بہت سی باتوں کو نظر انداز کر دیتی ہے جو مرد کو بری لگتی ہیں ۔ یہ لوگ آپس کے جھگڑوں میں اکثر دوسروں کو بولنے کی دعوت دیتے ہیں جس کی وجہ سے کبھی کبھار معاملات زیادہ بگڑ جاتے ہیں ، دونوں اپنے اپنے مؤقف پر ڈٹے رہتے ہیں۔
بہت سے لوگ ان کے اختلافات سے نا جائز فائدہ اٹھاتے ہیں۔
ان کے لئے ضروری ہے کہ:
*ایک دوسرے کے مزاج کو سمجھیں اور گھر کی سلامتی کو اہمیت دیں۔
*دوسروں کو اپنے معاملات میں بولنے کی اجازت نہ دیں۔
* ہٹ دھری کا مظاہرہ کریں۔
* یہ جان لیں کہ ان کی حرکتوں کا اثر بچوں پر پڑتا ہے

حمل عورت اور اسد مرد

یہ ایک کامیاب جوڑا ہے ۔ اس گھرانے پر مرد حکمران رہتا ہے چونکہ اسد مرد کی فطرت یہی ہے کہ وہ اپنی ذہانت اور طاقت سے حکمرانی کرنے کا خواہش مند ہوتا ہے۔ اسے معاشرے میں تو یقیناً اپنی فطرت کے مطابق زندگی گزارنے میں خاصی دشواری پیش آتی ہے کیونکہ اس کے سامنے بہت سے لوگ مزاحمت کرتے ہیں لیکن اہنے گھر میں وہ آسانی سے اپنی بیوی پر حاوی ہو جاتے ہیں ۔ یہ صرف طاقت کے زور پر ایسا نہیں کرتے بلکہ اس میں ان کہ ذہانت اور وفاداری کا بھی دخل ہوتا ہے ۔ یہ جانتے ہیں کہ ان کے گھر کی کیا کیا ضروریات ہیں جنہیں یہ پورا کرتے ہیں ۔ یہ اپنی بیوی سے شدید محبت کرتے ہیں جس کی وجہ سے ان کی بیوی ان کی اسیر ہو کر رہ جاتی ہے۔
اس کے باوجود کہ دوسری عورتیں ان میں دلچسپی لیتی ہیں یہ ان میں دلچسپی نہیں لیتے ، صرف اپنی بیوی پرا کتفا کرتے ہیں۔
ان دونوں میں اختلافات بہت کم ہوتے ہیں اور یہ اپنے بچوں پر بھر پور توجہ دیتے ہیں ۔ ان کے لئے ضروری ہے کہ :
* حاسدوں سے ہو شیار رہیں۔
* دوسروں کو اپنے معاملات میں دخل اندازی کا موقع نہ دیں۔

*حمل عورت اور سنبلہ مرد

ان کی زندگی اکثر بڑی کٹھن گزرتی ہے اور اس کی وجہ ان کے مزاج میں ہم آہنگی نہ ہونا ہے۔سنبلہ مرد بہت ہی ٹھنڈے مزاج کا ہوتا ہے ۔ یہ کبھی محبت میں جوش و خروش کا مظاہرہ نہیں کرتا جبکہ حمل عورت اس سے توقع کرتی ہے کہ اس سے پر جوش محبت کرے ۔ اس کے علاوہ سنبلہ مرد طنز اور تنقید بھی کرتا رہتا ہے جو حمل بیوی کے لئے بڑی اذیت کا مرحلہ ہوتا ہے۔
مرد ہر وقت صفائی ستھرائی چاہتا ہے ۔ اسے ہر چیز سلیقے سے درکار ہوتی ہے۔ وہ اکثر چھوتی چھوٹی باتوں پر چراغ پا ہو جاتا ہے ، دراصل لوگوں کی نظر میں یہ چھوٹی باتیں ہوتی ہیں لیکن یہ مرد انہیں اپنی باریک بین فطرت کی وجہ سے بہت بڑا تصور کر رہا ہوتا ہے۔
سنبلہ مرد اپنے گھر یلو معاملات اور بچوں کی طرف سے اکثر لا پروائی کا مظاہرہ کرتا ہے ۔ اور جھگڑا کرنے میں دیر نہیں لگاتا۔
اس جوڑے کے لئے ضروری ہے کہ :
* مرد اپنے گھر کے لئے اہمیت دے۔
*عورت یہ جان لے کہ اگر گھر سلامت رکھنا ہے تو اسے بڑی قربانیاں دینی ہیں

ایک دوسرے کو پوری طرح سمجھنے کی کوشش کریں

 

حمل عورت اور میزان مرد

یہ لوگ اگر آپس میں ایک دوسرے کو سمجھ لیں تو بڑی کامیاب اور قابل رشک زندگی گزار سکتے ہیں ۔ ان میں کچھ الجھنیں تو رہتی ہیں لیکن اگر یہ ایک دوسرے کو سمجھ جائیں تو ان الجھنوں پر قابو پا سکتے ہیں ۔ ان الجھنوں کی وجہ ان کی فطرت کا تضاد ہے۔ حمل عورت تیز رفتار ہے اور میزان سوچ سمجھ کر قدم اٹھانے کا عادی ۔ اپنے اپنے معاملات میں تو یہ ا پنی مرضی چلاسکتے ہیں جب دونوں نے مل کر کوئی کام کرنا ہو تو عورت کی خواہش ہوتی ہے کہ فوراٌ یہ کام کر لیا جائے جبکہ مرد چاہتا ہے کہ پہلے اچھی طرح سوچ لیا جائے جبکہ مرد چاہتا ہے کہ پہلے اچھی طرح سوچ سمجھ لیا جائے ، یوں اختلاف جنم لیتا ہے۔ ایسا مرد بحث مباحثے کو پسند نہیں کرتا ، اس کی خواہش ہوتی ہے کہ جو وہ چاہتا ہے بس وہ ہو جائے ، اس طرح بھی اختلافات کا پہلو سامنے آجاتا ہے۔
بہر حال یہ دونوں ایک دوسرے سے محبت کرتے ہیں اس لئے اکثر ان میں اختلافات زیادہ طول نہیں پکڑتے۔ یہ اپنے گھرانے کو سنبھالنے اور سنوارنے کو کوشش کرتے ہیں اور بچوں پر خصوصی توجہ رکھتے ہیں ان کے لئے ضروری ہے کہ:
*ایک دوسرے کے مزاج کو اچھی طرح سمجھ لیں۔
* مرد فضول خرچی سے گریز کرے۔
* اختلافات کو طول نہ پکڑنے دیں۔

حمل عورت اور قوس مرد

یہ جوڑا مجموعی طور پر اچھی زندگی گزارتا ہے ۔ قوس مرد ذرالاابالی سا ہوتا ہے ۔ اسے اپنے گھر سے لگاؤ ہوتا ہے لیکن اس کی خواہش ہوتی ہے کہ گھر کی اندرونی ساری ذمہ داریاں عورت
خود ہی سنبھالے ۔، ہاں وہ مالی معاملات میں بڑا مستحکم ہوتا ہے ، اس سلسلے میں خاتون خانہ کو اس کی طرف سے کبھی شکایت نہیں ہوتی۔
یہ مرد عام طور پر اپنے دوستوں میں وقت گزارنا پسند کرتا ہے اور اسے یہ بات بالکل پسند نہیں ہے کہ اس کی بیوی اس کے معاملات میں مداخلت کرے یا اسے روک ٹوک کرے ۔ اگر ایسا ہو تو بیوی سے بڑے جارحانہ انداز میں پیش آتا ہے۔
جذبات اور محبت کے معاملے میں بیوی کو اپنے شوہر کی طرف سے کبھی مایوسی کا سامنا نہیں کرنا پڑتا ۔ یہ مرد محبت کے معاملے میں بڑا جذباتی ہوتا ہے۔ اس کی توجہ بچوں پر زیادہ نہیں ہوتی ۔ اس جوڑے کے لئے ضروری ہے کہ:
* مرد گھریلو معاملات میں بھی دلچسپی لے۔
* عورت مرد سے کوئی بات طاقت سے منوانے کی کوشش نہ کرے بلکہ پیار محبت کی حکمت عملی اختیار کرے۔
* دونوں ایک دوسرے کے مزاج کو سمجھیں۔

حمل عورت اور جدی مرد

ان دونوں کے درمیان اکثر تلخیاں قائم رہتی ہیں کیونکہ ان کے مزاج میں بڑا تضاد ہوتا ہے۔حمل عورت تیز رفتار اور سمجھدار ہوتی ہے جبکہ جدی مرد زیادہ ذہین نہیں ہوتے اور سستی بھی ان کی فطرت کا حصہ ہے۔
یہ مرد خود کو دوسروں سے الگ تھلگ رکھنا پسند کرتا ہے ۔ اسے اپنے خیالوں کی دنیا اور اپنے معاملات سے زیادہ دلچسپی ہوتی ہے۔
یہ محبت کے معاملے میں کبھی گرم جوشی کا مظاہرہ نہیں کرتا،
یہ اپنے گھر میں رہنا پسند کرتا ہے اور گھر میں بھی اپنے کمرے میں رہتا ہے۔اس کی دلچسپی کی چیزیں مثلاٌ ٹیپ ریکارڈ ، ٹی وی ، وی سی آر وغیرہ اس کے پاس ہوتے ہیں ، یہ انہی میں مگن رہنا پسند کرتا ہے ۔ ایسے میں گھر کے سارے امور کو نمٹانے کی ذمہ داری خاتون خانہ پر آجاتی ہے۔
عورت کو اکثر اپنے شوہر کی کاہلی ، سستی اور غیر عقل مندانہ باتوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ایسے جوڑے کے لئے ضروری ہے کہ:
*مرد اپنی فطرت کے خول سے باہر آکر گھریلو ذمہ داریاں سنبھالے۔
* عورت خود ہی زیادہ ذمہ داریاں قبول کرے تو بہتر ہے۔
* دونوں آپس میں ہم آہنگی پیدا کریں۔

حمل عورت اور دلومرد

یہ ایک کامیاب جوڑا ہوتا ہے۔ ان کی خوشحال زندگی میں دونوں فریقین کا بڑا دخل ہوتا ہے۔حمل عورت تو اپنی خصوصیات رکھتی ہے جس سے گھر کو چار چاند لگ جاتے ہیں لیکن دلومرد کی خصوصیات سونے پر سہا گہ والی بات ہو جاتی ہے۔
یہ مرد بہت ذہین ، محنتی ،محبت کرنے والا اور فرائض کو سمجھنے والا ہوتا ہے۔ اس کی بیوی کو کبھی کسی معاملے میں اس سے کوئی شکایت نہیں ہوتی بلکہ یہ خاتون اکثر یہ سوچتی ہے کہ اس کا شوہر ہر معاملے میں اس سے تیز ہے۔
ان میں چھوٹے موٹے اختلافات جنم لیتے رہتے ہیں لیکن یہ زیادہ طول نہیں پکڑتے کیونکہ دونوں فریقین معاملے کو جلدہی سنبھال لیتے ہیں۔
دلو مرد کی ایک خصوصیت یہ ہے کہ وہ اکثر مختلف معاملات اور منصوبوں پر غور کرتا رہتا ہے ، اس طرح خیالوں میں کھویا دیکھ کر اس کی بیوی اس شک میں مبتلا ہو جاتی ہے۔ کہ وہ کسی عورت کے بارے میں سوچ رہا ہے۔ یہ بچوں پر خاص توجہ دیتے ہیں۔
ان کے لئے ضروری ہے کہ:
*دوسروں کو اپنے معاملات میں نہ بولنے دیں۔
* ایک دوسرے پر مکمل بھروسہ کریں۔
* جھگڑوں کو طول نہ پکڑنے دیں۔
* حاسد وں سے ہو شیار رہیں

حمل مرد اور حوت مرد

خوابوں کی دنیا میں رہنے والے حوت مرد کے ساتھ حمل عورت کو گزار کرنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے لیکن اگر عورت چاہے تو حالات کو قابو کر سکتی ہے ، اسے صرف یہ کرنا ہے کہ اسے کاہل آدمی کی عادتوں کو سمجھنا ہے ۔ اس عورت کو یہ ذہن نشین کرنا پڑے گا کہ اس آدمی کے ساتھ اس کی زندگی صرف اس صورت میں اچھی گزر سکتی ہے جبکہ یہ عورت زیادہ ذمہ داریاں خود اپنے کاندھوں پر لے لے۔
یہ آدمی بڑے بڑے منصوبے بنائے گا اور عملی طور پر کوئی خاص پیش رفت کر کے نہیں دکھائے گا ۔ اس کی باتیں بہت حوصلہ افزا ہوں گی۔ وہ باتوں باتوں میں ایسے ہوائی قلعے تعمیر کر دے گا کی سننے والا متاثر ہو جائے گا لیکن اس کی بیوی اس کی اس عادت سے تنگ آجاتی ہے۔
یہ اکثر گھر میں آرام کرتا نظر آئے گا ۔ یہ الگ بات ہے کہ اگر یہ ٹھان لے تو عملی جدوجہد کر کے واقعی اپنے خیالوں کا روپ دے سکتا ہے۔
ایسے جوڑے کے لئے ضروری ہے کہ :
* مرد اپنی ذمہ داریوں کا احساس کرے۔
*عورت ، مرد کی فطری خامیوں کو نظر انداز کرے۔
* عورت ، مرد کو پیار محبت سے عملی زندگی کی طرف لانے کی کوشش کرے ۔
* لڑائی جھگڑے سے گریز کریں۔

برج حمل کے تحت پیدا ہونے والے افراد کی تاریخ وار خصوصیات

مارچ 21

عاشق۔۔۔۔۔۔۔ پر عزم

ہمدرد۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔زیادہ دوست رکھنے والy

محنتی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سیاست

فضول خرچ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ بزنس مین

روشن خیال ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سوشل ورکر

حساس ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ محتاط

مارچ 22

ذہین ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ہمدرد

محنتی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سوشل ورکر

حساس ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تعلیم یافتہ

محتاط ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ فضول خرچ

آسودہ حال ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ دوست گزیدہ

کھلاڑی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ادیب

موسیقار ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ وکیل

گلوکار ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ صحافی

مارچ 23

تنہائی پسند۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔سنجیدہ
محنتی۔۔۔۔۔۔۔۔۔ کامیاب کاروباری
ذہین ۔۔۔۔۔۔۔۔۔حس مزاح رکھنے والے
حساس ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سوشل ورکر
محتاط۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔مہذب
تعمیری سوچ والے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ پر عزم
ماہر نفسیات ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ثابت قدم
طاقت ور۔۔۔۔۔۔۔۔۔ روایات سے محبت کرنے واکے

مارچ 24

غیر معمولی ذہین ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ثابت قدم
محنتی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔خوش مزاج
حساس۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔خوش لباس
توہم ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔سیاحت ہسند
جنسی بے راہ رہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔فضول خرچ
سیاست دان۔۔۔۔۔۔۔۔۔ زیادہ دوست رکھنے والے
دوست نواز۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔آزادی پسند

مارچ 25

حساس۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ کاہل
محنتی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سست
ذہین۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔خوابوں کی دنیا میں رہنے والے
جذباتی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔دوست نواز
جنسی بے راہ رہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ہمدرد
خوش باش۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سوشل ورکر
خوش لباس۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ادیب
فضول خرچ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ کالم نگار

مارچ 26

جذباتی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ادیب
کاہل۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔گلوکار
سست۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔کھلاڑی
خیالوں کی دنیا میں رہنے والے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ خواب گزیدہ
خوش ذوق۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ خوش لباس
موسیقار۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔فضول خرچ

مارچ 27

متاثر کن۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ دوستوں کے خواہشمند
سیاح۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ہوشیار
جنونی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ مفاد پرست
غیر مقصدی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ فضول الخیال
منتشر الخیال۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔مایوس
نقال۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔دشمن رکھنے والے
چالاک۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔غیر مستقل مزاج

مارچ 28

گانے کے شوقین۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سیاحت کے شوقین
ریس کے شوقین۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ لا پروا
دل پھینک۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ناکام کاروباری
قمار باز۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ بڑھکیں مارنے والا
دوست گزیدہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ پر کشش

 

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

Follow

Get every new post delivered to your Inbox.

%d bloggers like this: